دنیا کے سب سے بڑے کتاب میلے کا افتتاح

اتوار 08 نومبر 2015



دنیا کے سب سے بڑے کتاب میلے کا افتتاح
مانند آن لائن ڈیسک،بدھ کے روز جرمن شہر فرینکفرٹ میں دنیا کے سب سے بڑے تصور کیے جانے والے کتاب میلے کا افتتاح ہو گیا ہے۔ سلمان رشدی کی شرکت پر ایران نے مسلم ملکوں سے میلے کے بائیکاٹ کی اپیل کی ہے۔
سلمان رشدی کی آمد اور ایرانی بائیکاٹ کے بعد اِس کتاب میلے کو متنازعہ خیال کیا جا رہا ہے۔ ایران کے بائیکاٹ کے حوالے سے میلے کے ڈائریکٹر ڑو?رگن بْوس کا کہنا ہے کہ اِس میلے کو سیاست کی نذر ہونے سے بچانے کی ہر ممکن کوشش کی گئی ہے اور رواں برس کے میلے کا ایک بنیاد موضوع آزادء رائے ہے۔ بْوس کے مطابق سلمان رشدی کو اِس میلے کے موضوعات کے تناظر میں بطور مقرر دعوت دی گئی ہے۔ ایران نے کتاب میلے کے بائیکاٹ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ آزادء رائے کا بہانہ بنا کر عالم اسلام کی ناپسندیدہ شخصیت کو کتاب میلے میں شریک ہونے کی دعوت دی گئی ہے۔
تقریباً ایک ہفتہ قبل ایران کے نائب وزیر ثقافت عباس صالحی نے سلمان رشدی کی شرکت اور ایرانی ردِعمل کے طور پر اِس میلے کا بائیکاٹ کرنے کا اشارہ دیا تھا۔ منتظمین نے سلمان رشدی کی شرکت پر اپنا اصرار برقرار رکھا اور اسی باعث ایران نے رواں برس کے میلے میں شریک ہونے سے انکار کر دیا۔ عباس صالحی نے واضح طور پر کہا تھا کہ ایران دنیا کے سب سے بڑے کتاب میلے میں سلمان رشدی کی شرکت کے خلاف ہے۔ اپنے اْسی بیان میں صالحی نے صاف صاف کہہ دیا تھا کہ میلے کے منتظمین سلمان رشدی کی شرکت کو منسوخ نہیں کریں گے تو ایران میلے میں شریک نہیں ہو گا۔
 رواں برس کا نوبل انعام حاصل کرنے والی ادیبہ سویٹلانا الیکسیوچ کی کتب بھی میلے میں رکھی گئی ہیں 
رواں برس کا نوبل انعام حاصل کرنے والی ادیبہ سویٹلانا الیکسیوچ کی کتب بھی میلے میں رکھی گئی ہیں 
جنوب مشرقی ایشیا سے کم از کم ستر ادیب فرینکفرٹ کتاب میلے میں شریک ہیں۔ ان میں ایک لکشمی پامونجٹک اپنی نئی کتاب ’دی کوئسچن آف ریڈ‘ کو پیش کریں گی۔ اِس میلے کے دوران تین روز تک جاری رہنے والے مباحثوں میں تخلیق ادب میں مشکلات اورانتہا پسندی کے خلاف ادیبوں کی جدوجہد جیسے موضوعات کو مرکزی حیثیت حاصل ہونے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔ ان مباحثوں کے مختلف سیشنز میں گفتگو کی ابتداء  دنیا کے بیس مشہور ادیب کریں گے۔ ان بیس ادیبوں کے گروپ کی قیادت ڈنمارک کے معروف ادیب ڑینے ٹیلر کو تفویض کی گئی ہے۔
فرینکفرٹ کتاب میلے میں سات ہزار تین سو کے قریب نمائش کنندگان دنیا کے مختلف ملکوں سے شریک ہیں۔ اس میلے میں مشہور برطانوی ناول نگار کیٹ فولیٹ اپنے معروف ناول ’پِلرز آف دی ورلڈ‘ پر مبنی ایک ویڈیو گیم کو بھی متعارف کروانے والی تقریب میں خاص طور پر شریک ہوں گے۔ اِس مرتبہ چلی کی ادیبہ ایزابیل آیاندے، ڈنمارک کی ڑوسی ایڈلر اولسن اور برطانوی ماہرِ بشریات اور ادیب نِیجل بارلے کی شرکت کو بھی اہم خیال کیا گیا ہے۔
 


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (1)

  • MuradKhan says:

    very nice

    on November 08,2015

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Powered by : Murad Khan