باچا خان یو نیورسٹی کے طلباء کا مطالبات کے حق میں یونیورسٹی کی تالے بندی

بدھ 09 مارچ 2016


چارسدہ (بیورو رپورٹ) باچا خان یو نیورسٹی کے طلباء کا مطالبات کے حق میں یونیورسٹی کی تالے بندی ۔ تدریسی اور انتظامی عملہ کو یونیورسٹی کے اندر داخل ہونے سے روک دیا ۔ یونیورسٹی کے مرکزی گیٹ کے سامنے طلباء کا زبر دست احتجاج ۔ حکومت کے خلاف شدید نعرہ بازی ۔ وائس چانسلر نے 10دن کے اندر مطالبات منظور کرنے کی یقین دہانی کر ا دی ۔ طلباء کے مطالبات منظور نہ ہوئے تو 20مار چ سے طلباء کے ساتھ شانہ بشانہ احتجاج میں شامل ہونگا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر فضل رحیم مر وت ۔ تفصیلات کے مطابق چارسدہ میں باچا خان یونیورسٹی کے طلباء نے یونیورسٹی کے مرکزی گیٹ کو تالے لگا کر مطالبات کے حق میں زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا اور حکومت کے خلاف شدید نعرہ بازی کی ۔ احتجاجی طلباء نے تدریسی اور انتظامی عملہ کو یونیورسٹی کے اندر جانے سے روک دیا ۔ اس موقع پر خطاب کر تے ہوئے طلباء یونین کے صدر عدنا ن خان اور دیگر نے کہا کہ حکومت نے شہدائے با چا خان یونیورسٹی کے لواحقین کو اے پی ایس شہداء کے برابر پیکج دینے ، واقعہ کے حوالے سے جوڈیشل انکوائری اور با چا خان یونیورسٹی کے طلباء کو فیس معاف کرنے کے اعلانات کئے تھے مگر اس پر ابھی تک کوئی عمل در آمد نہیں کیا گیا ۔ انہوں نے مزید کہاکہ شہداء کے نام پر یونیورسٹی انتظامیہ نے امداد ی اکاؤنٹ کھول رکھا ہے جس میں باہر سے فنڈنگ ہو رہی ہے مگر لو احقین کو اس سے بے خبر رکھا جا رہا ہے ۔ کئی گھنٹے تک احتجاج کے بعد وائس چانسلر ڈاکٹر فضل رحیم مروت نے احتجاجی مظاہرین سے مذاکرات کئے اور ان کو یقین دلایا کہ 10دن کے اند ر اندر ان کے تمام مطالبات پورے کئے جائینگے ۔ انہوں نے طلباء کو یقین دلایا کہ مطالبات منظور نہ ہوئے تو 20مارچ سے وہ بذات خود طلباء کے احتجاجی تحریک کی قیادت کرینگے ۔بعدا زاں طلباء پر امن طور پر منتشر ہو گئے ۔


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Powered by : Murad Khan