پانی کی اہمیت اور ہیٹ سڑوک سے بچاؤ

پیر 06 Jun 2016


قارئین کرام!رمضان کی آمد ہے،اور گرمی کا موسم بھی اس موسم میں خصوصاً اور دیگر موسموں میں عموماًپانی کی اہمیت بڑھ جاتی ہے۔میں اس ادارے میں انسانی جسم میں پانی کی مقدار،پانی کی اہمیت،رمضان میں پانی کی اہمیت اور ہیٹ سڑوک سے بچاؤ کا ذکر کرونگا۔وزن کے لحاظ سے ایک بالغ انسان کے جسم میں اوسطاً 65فیصد پانی ہوتاہے،اور نوزائیدہ بچوں میں 73فیصدہوتاہے۔موٹاپے کے شکار لوگوں میں 45فیصد پانی ہوتاہے۔چربی والے بافتوں میں 10فیصد عضلات میں 75فیصد پانی ہوتاہے۔اسی طرح intra cellalarمیں 2/3حصہ پانی کا مطلب 70فیصداورExtra cellalarمیں 1/3حصہ کا مطلب 37فیصد پانی پر مشتمل ہوتاہے۔اسی طرح دماغ،پھیھپڑے،دل،آئینہ اور گردوں میں 85فیصد کا حصہ پانی ہوتاہے اور اسی طرح انسانی ہڈیوں میں 31فیصد پانی ہیں۔اسی طرح 70کلوگرام کے انسان میں پانی کی مقدار کچھ یوں ہے۔
    1۔28لیٹر خلیات کے اندر حصّہ میں 
    2۔14لیٹر خلیات کے باہر حصّہ میں 
    3۔3لیٹر پلازمہ میں 
    4۔1لیٹر دماغ میں،پھیپھڑوں اور پیٹ کے نالوں میں 
    5۔10لیٹرInstertitial spaceمیں 
اسی طرح 6عناصر میں خصوصی طور پر 99فیصد انسانی جسم کو بناتی ہے۔جس میں آکسیجن،کاربن،ہائیڈروجن،نائیڑوجن،کیلشیم اور فاسفورس شامل ہیں۔اگر ہم انسانی جسم کا احاطہ کرے تو وہ کچھ یوں ہے۔
    1۔پانی         62فیصد
    2۔پروٹین    16فیصد
    3۔پوٹاشیم    0.4فیصد
    4۔سلفر        0.2فیصد
    5۔سوڈیم    0.2فیصد
    6۔کلورائیڈ    0.2فیصد
    7۔میگنیشیم    0.1فیصد
    8۔چربی    16فیصد
    9۔کاربوہائیڈریٹ1فیصد
    نمکیات        6فیصد
    اکسیجن        65فیصد
    کاربن        18فیصد
                                             پانی کی اہمیت کچھ یوں ہے 
    1۔یہ ایک بُنیادی غذائی عنصر Vital Nutrientہے۔
    2۔یہ مختلف جسمانی کارکردیوں اور کام کو کنٹرول کرتاہے۔
    3۔جسم سے زہدیلے معدوں کو نکالتاہے۔
    4۔جسم کے درجہ حرارت کو کنٹرول کرتاہے۔
    5۔Labricantکا کام کرتاہے۔
                                   روزوں میں پانی کی ضرورت کچھ اسطرح ہے۔
    1۔پانی کی روزانہ ضرورت 2سے 2.5لیٹر ہے۔
    2۔افطاری سے سحری تک 10سے12گلاس پانی کا استعمال ضروری ہے۔
    3۔سحری میں نمکین،تیل والی اور کھّٹی چیزوں سے پرہیز کی جائے۔
    4۔جوسیز کا استعمال کم سے کم کی جائے۔
اب ہیٹ سڑوک کی طرف آتے ہیں۔یہ حرارتی بیماری ہے جب انسانی جسم  کا درجہ حرارت 105.1ڈگری سے بڑھ جائے۔اور ایسا اکثر ماحول میں شدید گرمی میں ایکسپوز ہونے سے یا جسم میں موجود حرارت کو کنٹرول کرنے والے نظام کی ناکامی کی وجہ سے  ہوتاہے۔
                                    اس کی مندرجہ ذیل علامات ہوتے ہیں۔
    1۔انسانی جسم کا درجہ حرارت 105.1ڈگری سینٹی گریڈ ہوتاہے
    2۔پسینہ کا نہ آنا اور توجہ میں کمی
    3۔چکرآنا،ذینی تناؤ،درد،کمزوری
    4۔جھٹکا،بے ہوشی،اعضاء کا فیل ہونا،موت
                                      اس سے بچاؤ اسپے ممکن ہے  
    1۔بلا ضرورت دھوپ میں نہ نکلا جائے۔
    2۔زیادہ سے زیادہ پانی کااستعمال کیا جائے۔
    3۔ستروں کو چادر،ٹوپیوں سے ڈھاپنا جائے۔
    4۔ٹھنڈی جگہوں پہ بیٹا جائے۔
    5۔Dantroleneدوائی کا استعمال کیاجائے
    6۔جسم میں جتنی کمی پانی کی آجائے،ڈرف سے اُن کی تلافی کیا جائے۔


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Powered by : Murad Khan