گرمی میں روزے دار بلا ضرورت دھوپ میں باہر نکلنے سے گریز کریں، ماہرین طب

منگل 28 Jun 2016


ماہرین طب ماہرین کا کہنا ہے کہ افطارکے وقت بیسن کی بنی اشیا نقصان دہ ہوسکتی ہیں شدیدگرمی میں بیسن پیٹ کے امراض میں مبتلا کرسکتا ہے افطار میں گھر کی بنی کچی لسی اور گھر کے مشروبات پینا مفید ہے کھانے میں زود ہضم اور ہلکی غذائیں استعمال کی جائیں افطار میں تلی ہوئی مرغن غذاؤں سے سے پیٹ خراب ہوسکتا ہے بیسن کی بنی اشیا زیادہ نہ کھائی جائیں ماہرین طب کے مطابق اتوار کوشدید گرمی میں روزے داروں کی اکثریت کوسر درد اور چکر آنے کے ساتھ قے کی بھی شکایات ہوئی ہے۔ماہرین طب نے کہا ہے کہ گرمی کے موسم میں پسینہ زیادہ خارج ہونے سے جسم میں نمیکیات کی کمی ہوجاتی ہے۔ لہٰذا جسم میں نمیکیات کی مقدار کو برقرار رکھنے کیلیے افطار میں گھرکے مشروبات اور لیموپانی اور لسی پینا انتہائی مفید ہوتا ہے افطار میں بیسن کی بنی اور تلی اشیا کھانے سے پیٹ کے امراض لاحق ہوسکتے ہیں لہٰذا افطار میں گھرکے مشروبات اور لیمو پانی پینا چاہیے دوپہر میں شدید گرمی، حبس اور لوکی وجہ سے جسم میں پانی کی شدید کمی سے ڈی ہائیڈریشن کی شکایات بڑھ رہی ہیں ماہرین طب نے کہا ہے کہ لیموں کا شربت پینے جسم کے ضایع ہونے والے نمکیات بحال ہوجاتے ہیں افطار اورسحری میں ہلکے کھانے کھائیں جائیں مرغن اور تیز مصالحے دار کھانوں سے تیزابیت ہوجاتی ہے چٹ پٹی چاٹ ، آلو چنے،گول گپوں سے اس موسم میں اجتباب کیا جائے۔


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Powered by : Murad Khan