مخدوش عمارت کسی بھی وقت گرنے سے بڑا سانحہ رونماہو سکتا ہے

ہفتہ 21 جنوری 2017


بٹ خیلہ (بیورو رپورٹ )گورنمنٹ پرائمری سکول تنگے پیر خیل کی مخدوش عمارت کسی بھی وقت گرنے سے بڑا سانحہ رونماہو سکتا ہے با ر بار توجہ مبذول کرانے کے باوجود متعلقہ محکموں کی روایتی سستی و لاپرواہی کی وجہ سے سینکڑوں معصوم طلباء کی قیمتی جانیں داؤ پر لگی ہو ئیں ہیں ایک دفعہ پھر صوبائی و ضلعی حکومتوں مقامی انتظامیہ اور محکمہ تعلیم کو سکول کی نازک صورت حال سے آگاہ کر کے اپنی عوامی نمائندگی کا حق ادا کر رہا ہوں تاکہ اللہ اور عوام کے سامنے اپنا ضمیر ہلکا کر سکوں ان خیالات کا اظہار یو نین کونسل پیر خیل سے منتخب ممبر ضلع کونسل ملاکنڈ اور عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما جہان بادشاہ نے پر یس کا نفر نس سے خطاب کر تے ہو ئے کیا انھوں نے کہا کہ پیرخیل کے گاؤں تنگے میں دو کمروں پر مشتمل لڑکوں کے سرکاری پرائمری سکول کی عمارت کی حالت انتہائی خراب ہے جبکہ زلزلے اور بارشوں نے اسے کھنڈرات میں تبدیل کر دیا جبکہ یہاں پر زیر تعمیر 280معصوم طلباء کیلئے دو کمرے پہلے ہی کافی ہیں تاہم ان کی مخدوش حالت نے رہی سہی کسر پوری کر دی ہے انھوں نے کہا کہ سردیوں میں بارش کے دوران سکول بند کر دیا جا تا ہے کیونکہ بارش کا پانی باہر کم اور اندر زیادہ ہو تاجبکہ گرمیوں کی سخت دھوپ میں ان کمروں میں طلباء کا بیٹھنا محال ہوجاتا ہے اس کے علاوہ سکول میں پانی اور بیت الخلاء کی بنیادی سہولتیں بھی نہیں ہیں انھوں نے کہا کہ کیا یہی حکومت کی تعلیمی ایمر جنسی ہے کہ خدانخواستہ کسی بڑے سانحے کا انتظار کیا جا رہا ہے انھوں نے کہا کہ اگر حکومت سکول کی نئی عمارت تعمیر نہیں کر سکتی تو سرکاری طور پر سکول کو بند کر دیا جائے کیو نکہ ہم اپنے بچوں کی زندگیوں کی قیمت پر انھیں تعلیم نہیں دلا سکتے ہیں۔


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Powered by : Murad Khan