دیر پائین نے سات ارب 34کابجٹ متفقہ طور پر منظور کر لیا

جمرات 10 اگست 2017


تیمرگرہ ( ڈسٹرکٹ رپورٹر) ضلع کونسل دیر پائین نے مالی سال 2017.18کیلئے سات ارب 34کروڑ 30لاکھ 82ہزار نو سو 82روپے کی سیلری و نان سیلری بجٹ متفقہ طور پر منظور کر لیا جس میں چھ ارب 34کروڑ سیلری جبکہ 26کروڑ 74لاکھ ضلع ناظم نے اراکین کونسل کے لئے سال 2016ء جولائی سے اعزازیہ دینے کا اعلان کرتے ہوئے محکمہ فنانس کو ہدایت جاری کی کہ اراکین کونسل کو جولائی2016ء سے اعزازیہ دی جائے اس سلسلے میں ضلع کونسل کا اجلاس زیر صدارت ضلع نائب ناظم عبد الرشید کونسل ہال بلامبٹ میں منعقد ہوا اجلاس میں ضلع ناظم حاجی محمد رسول خان کے علاوہ مرد وخواتین ممبران نے شرکت کی مالی سال 2017.18ء پر اراکین کونسل اپوزیشن لیڈر ملک محمد زیب،جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر سیف الا سلام،مولانا عمران جندولی ،اظہر تقویم،عالم زیب ایڈوکیٹ،ملک عبداللہ شاہ،تازہ خان،قیصر علی خان،رحمن یوسف ،واصل خان اور خاتون ممبر سائرہ شمس نے اظہار خیال کیا اپوزیشن ممبران نے شکوہ کیا کہ بجٹ کی تیاری میں فنڈز کو پسند ونا پسند بنیادوں پر دینے سے گریز کیا جائے اور انصاف کی تحت تقسیم کی جائے انھوں نے صوبائی وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ کا شکریہ ادا کیا کہ انھوں نے ضلع کونسل کو تیرہ کروڑ روپے دیکر فراخدلی کا مظاہرہ کیا ہمارا مطالبہ ہے صوبائی وزیر کی فنڈز یکساں تقسیم کی جائے بجٹ پر ضلع ناظم حاجی محمد رسول خان نے بجٹ پر بحث سمیٹتے ہوئے کہاکہ اس معزز کونسل میں کسی قسم کی کوئی اپوزیشن نہیں ہم سب ایک ہے اور عوام نے جس مقصد کیلئے ہمیں منتخب کرکے بھیجا ہے اس کو کماحقہ ادا کرنے کی ضرورت ہے انھوں نے کہاکہ تمام ممبران ان کیلئے معزز اور عزت کی نگاہ سے دیکھتا ہوں اور کوشش کی ہے کہ کسی کے ساتھ کوئی بے انصافی نہ ہو انھوں نے کہاکہ ضلع کونسل دیر پائین پورے صوبے میں ایک مثالی کونسل ہے جس کی تمام کریڈٹ یہاں کے اراکین کو جاتاہے جو ضلع کی تعمیر و ترقی کیلئے مشترکہ طور پر جدوجہد کر رہے ہیں انھوں نے کونسل ممبران کا شکریہ اداکیا کہ جنھوں نے متفقہ طور پر بجٹ کو منظور کیا۔
 


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Powered by : Murad Khan