بٹ خیلہ ، سرگرم قبضہ مافیاکے خلاف از خود نوٹس لینے کی اپیل

پیر 12 مارچ 2018


بٹ خیلہ (مانند رپورٹ) یونین کونسل طوطہ کان کے نمائندہ جرگے نے چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ سے زیارت حصاربابا کے قدیمی وقف قبرستان کے تحفظ اور اس میں سرگرم قبضہ مافیاکے خلاف از خود نوٹس لینے کی اپیل کی ہے تاکہ پورے علاقے میں پائی جانے والی بے چینی کا خاتمہ ہوسکے اور عوام کسی بڑے تصادم سے بچ سکیں ملاکنڈ انتظامیہ کی عدم دلچسپی اور ٹال مٹول کی وجہ سے یہ مسئلے سنگین صورت حال اختیار کر رہا ہے ان خیالات کا اظہاریونین کونسل طوطہ کان کے امن کمیٹی کے صدر اور جنرل کونسلرواجد حسین جنرل سیکرٹری کریم اللہ نور حسین گل محمد ابرار محمد اور حفیظ الحق نے مشتر کہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہو ئے کیا انھوں نے کہاکہ زیارت طو طہ کان کاصدیوں قدیم ہزاروں قبروں پر محیط قبرستان جس میں حصار بابا کا روضہ بھی واقعہ ہے 2010ء کے تباہ کن سیلاب کے بعد بعض مقامی با اثر افرد کی حمایت سے مولانا عبید اللہ نا می شخص قبضہ گروپ کا سرغنہ بن کر اس میں زمینیں فروخت کررہا ہے جبکہ مقامی انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ہورہی اور دوسری جانب ان سازشی عناصر کے ایما پر امن کمیٹی کو اپنی مدد آپ کے تحت حفاظتی چاردیواری کی تعمیر سے بھی روک دیا گیا ہے جو کہ سخت ظلم و زیادتی ہے انھوں نے کہاکہ ہم اپنے آباو اجداد کی نشانیوں کو مٹانے اور اپنی آخری آرام گاہوں کی اس جگہ پرکسی کوقبضے کر نے اور اس خرید و فروخت کی اجازت نہیں دیں گے انھوں نے کہاکہ اگر مذکورہ قبرستان کے تحفظ کو یقینی بنا کر قبضہ مافیاکو اس کی خریدوٖفروخت سے نہ روکا گیا تو علاقے میں خونزیز تصادم کا خطرہ ہے انھوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہو ئے کہا کہ ملاکنڈ انتظامیہ خیبر پختونخوا گریو یارڈ ایکٹ1958ء پر عمل درآمدمیں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے جبکہ امن کمیٹی مسلسل دوسال سے ملاکنڈ کے مختلف انتظامی افسران سے ملاقاتیں اور جرگے کر کے تھک چکے ہیں انھوں نے چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ سے اس اہم مسئلے کا از خود نوٹس لینے کی اپیل کی ۔ 
 


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Developed by : Murad Khan