ا لپوری ، شانگلہ میں سرکاری گاڑیوں کا بے دریغ استعمال عروج پر

بدھ 04 اپریل 2018


ا لپوری( نما ئندہ مانند) شانگلہ میں سرکاری گاڑیوں کا بے دریغ استعمال عروج پر ،نئے سرکاری گاڑیاں کباڑہ بن گئی،حکومتی خزانہ کو لاکھوں کا ٹیکہ، کئی سرکاری گاڑیاں ایک ہی جگہ پر مستقل طور پر رکنے کے باوجود اس پر مرمت اور ایندھن کے مد میں پیسے نکالے جانے کا انکشاف۔ شانگلہ میں سرکاری گاڑیوں کے مرمت پر ماہانہ لاکھوں روپے خرچ ہوتے ہیں، افسران اور اہلکاراں گاڑیوں کواپنے ذاتی کاموں کیلئے استعما ل کرتے ہیں، ضلع شانگلہ میں اکثر ضلعی افسران کے ساتھ پانچ پانچ گاڑیاں زیر استعمال ہیں،ضلع کے بعض سرکاری گاڑیاں افسران کے رشتہ داروں کے زیر استعمال ہے اور وہ بھی ضلع سے باہر۔ عوامی ٹیکسوں کاپیسہ یہ چند افراد شیر مدر سمجھتے ہیں ۔عوامی و سماجی حلقوں کا اظہار برہمی۔ وزیراعلیٰ پرویزخٹک سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔ صوبہ خیبر پختونخوا میں پسماندگی کی لحاظ سے سرفہرست اور کرپشن میں درجہ اول کے حثیت رکھنے والی ضلع شانگلہ میں سرکاری گاڑیوں کا ناجائز ۔ نجی کاموں اوربغیر استعمال کے گاڑیوں پر بڑے پیمانے پر پیسے نکالنے کا بھی انکشاف کیا گیا ہے۔ سرکاری گاڑی غلط طریقے سے استعمال ہورہے ہیں جو سراسر زیادتی ہے ایک ایک آفسر کے پاس کئی گاڑیاں زیر استعمال ہیں، جو وہ زیادہ تر گھر یلوں ،ذاتی امور اور سکول بچوں کے کاموں کیلئے استعمال کرہے ہیں،شانگلہ کے سرکاری گاڑیاں اکثر باہر کے اضلاع میں دکھائی دیتی ہیں، بلدیاتی نمائندے بھی کسی سے کم نہیں وہ بھی کئی سرکاری گاڑیاں رکھتے ہیں اور اپنے ذاتی کاموں میں استعمال میں لاتے ہیں۔ ضلع کے بعض سرکاری گاڑیاں افسران کے رشتہ داروں کے زیر استعمال ہے اور وہ بھی ضلع سے باہر۔ کھبی بچوں کوسکولوں لے جاتے ہیں تو کھبی بازار سے سودا سلف اور سیر سپاٹے کیلئے گاڑیاں دوڑاتے ہیں نجی تقریبات اور چھٹیوں میں سرکاری گاڑیاں استعمال میں لاتے ہیں کیا یہ کرپشن نہیں ہے ۔عوامی حلقوں میں نئے سوالات جنم لے رہے ہیں،اس پر عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ ضلعی افسران سرکاری گاڑیوں کا بے دریغ استعمال کرتے ہیں ان گاڑیوں میں سرکاری فیول استعمال کرتے ہیں ، ضلع سے باہر جانے پر ٹی اے ڈی اے بھی سرکار سے لیتے ہیں اور کام اپنا کر تے ہیں۔ عوامی سماجی حلقوں نے خیبر پختونخوا کی صوبائی حکومت وزیر اعلیٰ پرویز خٹک سے اصلاح احوال کیلئے اقدامات اٹھانے کامطالبہ کر دیا ہے۔
 


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Developed by : Murad Khan