بٹ خیلہ ، غیر ملکی ڈونر ایجنسی کی تعلیم دشمن پالیسیاں سود مند ثابت نہیں

پیر 09 اپریل 2018


بٹ خیلہ (مانند رپورٹ) خیبر پختونخوا کے نجی تعلیمی اداروں کی نمائندہ تنظیم پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک نے صوبائی حکومت کی جانب سے غیر ملکی ڈونرایجنسیوں کے ایما پر نظام و نصاب تعلیم میں مجوزہ تبدیلیوں کو مذہبی و قومی اقدار کے خلاف قرار دیتے ہو ئے مکمل طور پر مسترد کر دیا ہے پین صوبائی سینئر نائب صدر امجد علی شاہ نے پر یس کانفر نس سے خطاب کر تے ہو ئے کہا ہے کہ تمام ادارے آئین و قانون کے پابند ہیں جبکہ غیر ملکی ڈونر ایجنسی کی تعلیم دشمن پالیسیاں ملک و قوم کیلئے کسی طور پر سود مند ثابت نہیں ہو سکتیں انھوں نے کہا کہ ماہرین تعلیم اور محب وطن افرادکی مشاورت کے بغیر غیر ملکی ڈونرز کے ایما پر نظام و نصاب تعلیم میں ترامیم نہ صرف سراسر غیر قانونی ہیں بلکہ دینی وقومی اقدار کو کچلنے کے مترادف ہے ایسے فیصلے نہ پہلے کبھی تسلیم کئے نہ اب کریں گے انھوں نے کہا کہ نجی تعلیمی اداروں پرانڈپنڈنٹ ما نیٹرنگ یونٹ کا کالا قانون مسلط کرنا کسی صورت قابل قبول نہیں تعلیمی اصلاحات کے نام پرصوبائی حکومت کے اقدامات شعبہ تعلیم کو غیروں کے ہاتھ بیچنے کی سازش کا میاب نہیں ہونے دی جائے گی IMUکا DMO تعلیمی تقاضے کی اہمیت سے ناواقف ہیں صوبائی حکومت اپنے اوچھے ہتھکنڈوں سے ریگولیٹری اتھارٹی کے نام پر نجی تعلیمی اداروں کو دباؤ میں لانے کے خواب دیکھناچھوڑدے اور ڈسٹرکٹ سکروٹنی کمیٹی کا نوٹیفکیشن فی الفور منسوخ کرے بصورت دیگر ہم احتجاج کے علاوہ عدلیہ کا دروازہ کھٹکھٹانے پر مجبور ہو جائیں گے انہوں نے مزید کہا کہ ہم نجی پلیٹ فارم سے اپنے تحفظات پہلے ہی جمع کروا چکے ہیں IMUنوٹیفکیشن میں رولز آف بزنس کو فالو نہیں کیا گیاپرائیویٹ سیکٹر ممبرز کی نشاندہی پر33ترامیم پر قانون سازی کے دوران اتفاق ہوا تھا جس کے منٹس ابھی تک ممبران کو موصول نہیں ہوئے اور نہ ہی اختیارات کے حوالہ سے ترمیم کا نوٹیفکیشن بھی جاری نہیں کیا گیا ایسی صورت میںIMUنوٹیفکیشن حکومتی اقدامات پر سوالیہ نشان ہے۔
 


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Developed by : Murad Khan