0

جمرود پریس کلب کی تقریب حلف برداری تقریب کا انعقاد

جمرود (مانند نیوز ڈیسک) جمرود پریس کلب کی تقریب حلف برداری تقریب کاانعقاد تفصیلات کے مطابق جمرود پریس کلب کے نو منتخب عہدیداران کی تقریب حلف برداری منعقد ہوئی جس میں سابق ایم این اے و پارلیمانی لیڈر الحاج شاہ جی گل آفریدی،ایم پی اے الحاج بلاول آفریدی،ایم پی اے الحاج شفیق شیر آفریدی،خاتون ایم پی اے الحاج بصیرت خان شینواری،پشاور پریس کلب کے صدر محمد ریاض خان قبائیلی مشران،سیاسی رہنماؤں،صحافیوں کے علاؤہ مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔سابق ایم این اے الحاج شاہ جی گل آفریدی نے نو منتخب عہدیداران سے حلف لیا اور پریس کلب صحافیوں کو عمرے و حج کی سعادت حاصل کرنے کے لیے قرعہ اندازی کے ذریعے بھیجنے، گرانٹ دینے اور جمرود پریس کلب کے لیے سولر سسٹم لگانے کا اعلان کیا۔تقریب میں نو منتخب صدر ساجدعلی کوکی خیل نے مہمان خصوصی الحاج شاہ جی گل آفریدی کو روایتی قلہ لونگی  و مہمانان گرامی کو شیلڈ پیش کیں،تقریب سے  سابق ایم این اے الحاج شاہ جی گل آفریدی،پشاور پریس کلب کے نو منتخب صدر محمد ریاض خان،خاتون ایم پی اے بصیرت خان شینواری نے خطاب کیا اور صحافیوں کی قربانیوں پر روشنی ڈالی،تقریب سے سابق ایم این اے و پارلیمانی لیڈر تحریک اصلاحات پاکستان کے سربراہ الحاج شاہ جی گل آفریدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صحافی معاشرے کے آنکھ و کان ہوتے ہے اور علاقائی مسائل حکمرانوں اور حکمرانوں کی آواز عوام کو پیشہ ورانہ طریقے سے پہنچاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جمرود کے صحافیوں نے ہر سخت وقت میں علاقے کے عوام کے ساتھ بہتر طریقے سے ساتھ دیا۔انہوں نے کہا کہ لر او بر کے نعرے نے پختونوں کو بہت نقصان دیا ہے اس لیے ان نعرے کے خلاف سیاسی میدان میں اتروں گا۔انہوں نے کہا کہ ہم پر امن افغانستان اور پر امن پاکستان کے حامی ہے ڈیورنڈ لائن پر خاردار تار کی حمایت اس لیے کی تھی کہ حالات افغانستان اور پاکستان مئں امن ہوجائے خاردار تار لگانے سے پاکستان میں کافی حد تک امن آگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے علاقے مچھ واقعہ کی بھرپور مزمت کرتے ہیں اور ملوث افراد کو گرفتار کرکے سخت سے سخت سزا دی جائے وزیراعظم عمران خان کو ہزارہ برادری سے اظہارِ یکجہتی کے لیے جانا چاہئیے تھا۔الحاج شاہ جی گل آفریدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ کی وزیراعظم عمران کی مستعفی ہونے کے مطالبہ کی مکمل حمایت کرتے ہیں وزیراعظم و موجودہ حکومت مکمل ناکام ہوچکے ہیں اس لیے ان کو فوری مستعفی ہوکر میڈٹرم انتخابات منعقد کیے جائے اور عوام کے ووٹ کے ذریعے منتخب حکومت بنائی جائے۔انہوں نے کہا کہ 2018 انتخابات میں مکمل دھاندلی کی گئی تھی اس لیے پورے ملک نے اس نتیجہ کو یکسر مسترد کیا تھا ہم ہر امن نئے میڈ ٹرم انتخابات کی حمایت کرتے ہیں۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں