0

تخت بھائی میں معصوم بچی کے ساتھ جنسی زیادتی، ملزم گرفتار

تخت بھائی (مانند نیوز ڈیسک) تخت بھائی کے علا قہ چراغ دین کلی میں معصوم بچی کے ساتھ جنسی زیادتی کے الزام میں گرفتار ملزم کی ضما نت مسترد۔ چائلڈ پروٹیکشن کورٹ مردا ن کی عدا لت نے ملزم افضل کی درخواست ضمانت پر فیصلہ سنا دیا۔ تفصیلات کے مطابق 22ستمبر 2020 کو تخت بھائی کے نواحی علاقہ چراغ دین کلی میں شیطان صفت 17سالہ ملزم افضل ولد جنت گل نے پڑوسی 7سالہ کمسن معصوم بچی مسکان دختر جان سید کے ساتھ جنسی زیادتی کی تھی۔ تخت بھائی پو لیس نے بروقت کارروائی کرکے ملزم کو گرفتار کیا تھا۔ ملزم نے چائلڈ پروٹیکشن کورٹ مردان میں ضمانت کے لئے درخواست دی تھی۔ چائلڈ پروٹیکشن کورٹ مردان کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ سیشن جج اعجاز احمد نے جمعے کے روز ملزم کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی۔ معصوم بچی مسکان کیس کی پیروی ممتاز قانوندان جاوید خان ایڈو کیٹ آف تور ڈھیر نے کی۔ فیصلے کے بارے میں متاثرہ بچی کے بھائی جان محمد ولد جان سید نے تخت بھائی پریس کلب میں بات چیت کرتے ہو ئے مذکورہ فیصلے کا خیر مقدم کیا اور اسے حق کا جیت قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ ان کا تعلق انتہائی غریب گھرانے سے ہیں۔انہوں نے چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ اور دیگر اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ انہیں انصاف دیا جائے اور ملزم کو قرار واقعی سزا دیکر کھلے عام پھانسی پر لٹکا یا جائے تاکہ آئندہ کوئی بھی درندہ صفت انسان ایسا گھناؤنا حرکت کرنے کی جرات نہ کرسکے اور دوسروں کے لئے نشان عبرت بن جائے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں