0

خواتین پر تشدد کرنیوالوں کے خلاف 5 پانچ سال تک قید کی سزا ہوگی

پشاور (مانند نیوز ڈیسک) خیبر پختونخوا کے وزیر سماجی بہبود ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا اسمبلی میں خواتین پر گھریلو تشدد کی روک تھام کا بل منظور کرکے صوبائی اسمبلی سے پاس کرکے صوبے کیلئے قانون بنادیاہے جس میں خواتین پر تشدد کرنیوالوں کے خلاف 5 پانچ سال تک قید کی سزا ہوگی۔ صوبائی وزیر ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے مزکورہ بل کو انتہائی آہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ معاشی، نفسیاتی و جنسی دباؤ خواتین پر تشدد کے ذمرے میں آئینگے اور بل کے تحت ضلعی تحفظاتی کمیٹی بھی بنائی جائے گی،کمیٹی متاثرہ خاتون کو طبی امداد، پناہ گاہ، معقول معاؤنت بھی فراہم کریگی۔ انہوں نے کہا کہ گھریلو تشدد واقعات کی رپورٹ کیلئے ہیلپ لائن قائم کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔ تشدد ہونے کی صورت میں 15دن کے اندر عدالت میں درخواست جمع کرائی جائے گی۔ بل میں عدالت کیس کا فیصلہ 2 ماہ میں سنانے کی پابند ہوگی۔ ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے کہا کہ عدالتی فیصلے کی خلاف ورزی پر 1سال قید اور 3 لاکھ روپے تک جرمانہ بھی ہوگا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ بل پر علمدرآمد سے گھریلو تشدد کی واقعات میں کمی آئیگی۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں