0

ملازئی ہاؤسنگ سکیم پشاور کی چوکیداروں اور عملہ کی غیر حاضری

پشاور (مانند نیوز ڈیسک) خیبر پختونخوا کے وزیر ہاؤسنگ ڈاکٹر امجد علی نے ملازئی ہاؤسنگ سکیم ورسک روڈ پشاور کی چوکیداروں اور دیگر ذمہ دار اہلکاروں کا ڈیوٹی سے غیر حاضر ہونے پر اْن کی معطلی کے احکامات جاری کرتے ہوئے محکمہ ہاؤسنگ اور بالخصوص پی ایچ اے کے عملہ کو خبردار کیا ہے کہ غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کرنے اور ذمہ داریوں سے غفلت برتنے والے اہلکاروں کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق کچھ عرصہ پہلے صوبائی وزیر ہاؤسنگ ڈاکٹر امجد علی کو شکایات موصول ہوئی تھی کہ ملازئی ہاؤسنگ سکیم ورسک روڈ پشاور کے سائیٹ آفس میں عملہ اور چوکیدار غیر حاضر رہتے ہیں۔ جس پر صوبائی وزیرِ ہاؤسنگ نے متعلقہ اہلکاروں کو قبلہ درست کرنے اور عوام کو بھر پور فسیلیٹیٹ کرنے کی ہدایات جاری کی تھی۔پیر کے روز صوبائی وزیرِہاؤسنگ کو ملازئی ہاؤسنگ سکیم میں ملازمین کی غفلت ان کی غیر حاضری اور عوام کو درپیش مشکلات سمیت منصوبے میں شامل پارکس اور پودوں کی غیر کفالت وغیرہ کی شکایات موصول ہوئی۔ جس پر صوبائی وزیر نے فوراً ایکشن لیتے ہوئے مذکورہ منصوبے کے جائے وقوع کا اچانک دورہ کیا۔ دورہ کے موقع پر مین دروازے کی بندش اور چوکیداروں و دیگر ذمہ دار اہلکاروں کی غیر حاضر ہونے پر صوبائی وزیر نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ذمہ دار ملازمین کی فوری معطلی کے احکامات جاری کئی۔ اپنے دفتر سے جاری ایک بیان میں صوبائی وزیر ہاؤسنگ نے مذکورہ منصوبے کی اہمیت پر بات کرتے ہوئے کہا کہ190 کنال اراضی پر 258.865 ملین روپوں کی لاگت سے بنائی گئی ملازئی ہاؤسنگ سکیم میں کل 371 پلاٹس پر صارفین نے کام بھی شروع کیا ہیں جبکہ منصوبے میں جامعہ مسجد اور تین پارکس پر کام مکمل ہونے سمیت گیس، بجلی، وٹر سپلائی اور نکاس آب کے مراحل بھی مکمل ہو چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صارفین کی آسانی کی خاطر محکمہ ہاؤسنگ نے جائے وقوع پر ایک سائیٹ آفس کھلوانے کیساتھ اس میں عملہ اور دیکھ بال کیلئے چوکیدار بھی تعینات کی ہیں۔ وزیر ہاؤسنگ نے منصوبے سے متعلق عوام کے لئے آسانیاں پیدا کرنے کے برخلاف چوکیداروں کی غیر حاضر رہنے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے تمام اہلکاروں کو اپنی فرائضِ منصبی سمجھنے اور اسے سنبھالنے کے ہمرہ دلجمعی سے اپنی ذمہ داریوں کی انجام دہی پر بھی زور دیا۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں