0

نوشہرہ میں سرکاری ملازمین کا اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرہ

نوشہرہ (مانند نیوز ڈیسک) نوشہرہ سرکاری ملازمین کا اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرہ مطاہرین نے گورنمنٹ ہائی سکول نمبر 1سے شوبرا چوک اور پھر پریس کلب نوشہرہ تک مارچ کیا مظاہرین کی قیادت آل گورنمنٹ ایمپلائز کے ضلعی صدر محمد ادریس ہاشمی، ایپکا کے مرکزی سینئر نائب صدر غلام سرور خان، آل درجہ چہارم کے صوبائی صدر افسر خان خویشگی، انجمن پٹواریان و قانون گویان کے صدر کاشف خان خویشگی،، ملگری اساذان کے صدر محمد ناہید کان، تنظیم اساتذہ کے صدر مقصود علی شاہ، معراج خان، اور پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ایسو سی ایشن کے صدر اسد خان بدرشی کر رہے تھے مظاہرین نے موجودہ حکومت کو ملک کی تاریخ کی ظالم ترین حکومت قرار دیتے ہوئے حکمرانوں کے خلاف شدید نعرہ بازی کی مظاہرین نے پریس کلب کے سامنے بھر پور احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے محمد ادریس ہاشمی نے کہا کہ موجودہ حکمرانوں نے سرکاری ملازمین کو دیوار سے لگانے کی بھر پور کوشش کی ہے لیکن سرکاری ملازمین کے رہنماوں نے حکومت پر دباو دال کر پنشن کا خاتمہ، سالانہ ایکریمنٹ کا نہ لگنا ار سرکاری ملازم کا مدت ملازمت کا دورانیہ 63سال کے تمام جابرانہ فیصلے مسترد کرکے اپنی مدبرانہ اور قائدانہ صلاحیتوں سے آئی ایم ایف کے مسلط کردہ قوانین کو ہمیشہ ہمیشہ کیلئے دفنا کر ملازمین کا مقدمہ جیت گئے ہیں لیکن اب ہمارا مطالبہ یہ ہے کہ ملک بھر میں مہنگائی اسمان سے باتیں کر رہی ہے اور سرکاری ملازمین کی تنخواہیں وہی ہے اس لئے حکومت سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں مہنگائی کے تناسب سے اضافے کا اعلان کریں اور اگر حکومت نے ہمارا مطالبہ تسلیم نہ کیا تو ملک بھر کے سرکاری ملازمین 10فروری کو اسلام آباد میں دھرنا دیں گے اور اس وقت تک دھرنا ہو گا جب تک سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کی نوٹیفیکیشن نہیں ہو تی انہوں نے مزید کہا کہ سرکاری ملازمین بہت جلد خوشخبری سن لیں گے لیکن اب سرکاری ملازمین قائد ملازمین فضل غفار باچا اور اسلام الدین کی قیادت میں تشکیل کردہ قا فلے کی جد وجہد میں لمحہ بہ لمحہ شریک رہے انہوں نے مزید کہا کہ ہفتے کے ہر منگل کو کلرکس کا قلم چھوڑ، اساتذہ کا کلاس چھوڑ اور دیگر سرکاری ملازمین کا کام چھوڑ ہڑتال ہو گا۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں