0

نوشہرہ میں واپڈا ملازمین سراپا احتجاج بن کر سڑکوں پر نکل آئے

نوشہرہ (مانند نیوز ڈیسک) واپڈا کی نجکاری کی خلاف واپڈا ملازمین سراپا احتجاج بن کر سڑکوں پر نکل آئے واپڈا کی نجکاری کو موجودہ حکومت کا ظالمانہ فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت  واپڈاکی نجکاری سے باز آجائیں کیونکہ یہ صرف واپڈا کی نجکاری نہیں بلکہ اس ادارے میں ملازمت کرنے والے ملازمین کی عزت نفس کا بھی سوال ہے اگر حکومت واپڈا کی نجکاری سے باز نہ آئی تو پھر واپڈا کے ملازمین ملک بھر میں بھر پور احتجاج کریں گے ان خیالات کا اظہار نوشہرہ میں زونل چیئر مین خیبر سرکل یونس شاہ، زونل جنرل سیکرٹری شفیق اللہ، ڈویژنل چیئر مین جان سید، صوبائی جنرل سیکرٹری امجد علی، چیئرمین کینٹ شیراز خان، چیئر مین رسالپور سب ڈویژن ارشاد خان، محمد اظہر اور دیگر نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جس پر واپڈا کی نجکاری کے خلاف نعرے درج تھے مظاہرین جی ٹی روڈ سے ہوتے ہوئے نوشہرہ کلاں سے جلوس کی شکل میں نوشہرہ کینٹ پہنچے جہاں پر جلوس نے جلسے کی شکل اختیار کی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ موجودہ حکومت اس ملک کی تاریخ کی سب سے زیادہ ظالم اور عوام دشمن حکومت ہے کیونکہ اس حکومت کی کوئی پالیسی مزدور وں کے فلاح و بہبود کیلئے نہیں بلکہ آئی ایم ایف اور دیگر استعماری اور مزدور دشمن اداروں کی خوشنودی کیلئے بائی جاتی ہے انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں مہنگائی اسمان سے باتیں کر رہی ہے اور واپڈا سمیت دیگر اداروں کے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہیں کیا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ واپڈا میں سن کوٹہ بحال کیا جائے کیونکہ کئی سالوں سے ریٹائرڈ اور وفات شدہ ملازمین کے بچوں کی حق تلفی کی جارہی ہے اور ان کو سن کوٹہ میں بھرتی نہیں کیا جا رہا ہے انہوں کہا کہ حکمران ہوش کے ناخن لیں اور آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے مفادات کی بجائے پاکستان کے غریب عوام اور مزدوروں کے مفادات کو مد نظر رکھ کر پالیسیاں بنائی جائیں انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے واپڈا کی نجکاری کی تو ہمارا یہ پر امن احتجاج پر تشدد احتجاج میں تبدیل ہوکر نہ صرف خیبر پختونخواہ بلکہ پاکستان بھر میں واپدا کے ملازمین سڑکو ں پر نکل کر ظالم حکمرانوں کے خلاف دما دم مست قلند کریں گے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں