0

کسی کو بھی امن و امان کی صورتحال خراب کرنے کی اجازت نہیں، ڈپٹی کمشنر ملاکنڈ

ملاکنڈ (مانند نیوز ڈیسک) ڈپٹی کمشنر / کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز ریحان خٹک نے کہا ہے کہ کسی کو بھی امن و امان کی صورتحال خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی اور ضلع ملاکنڈ میں امن وامان برقرار رکھنے کیلئے انتظامیہ ہرممکن اقدام اٹھائے گا۔انھوں نے کہاکہ ملاکنڈ کے علاقے پلئی کے مقام پر چند لوگوں کی جانب سے سوات ایکسپریس وے کو بند کرنے کی کوشش حکومتی رٹ کو چیلنج کرنے کے مترادف ہے جس میں ملوث 16 افراد کو قانون کے زیر دفعہ 3 ایم پی او کے تحت گرفتار کرکے مختلف جیلوں کو بھیج دیا گیا ہے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ عوام کے مابین پائے جانے والے تنازعات کے حل کیلئے عدالتیں موجود ہیں اور اپنے مطالبات کو منوانے کیلئے ایسا طریقہ اختیار کرنا ہرگز درست اور قابل قبول نہیں جس کے لیے قانون کو اپنے ہاتھ میں لیا جائے اور قومی شاہراہوں کو بند کیا جائے۔انھوں نے کہا کہ عوام اپنے مابین پائے جانے والے مسائل کو عدالتی فیصلوں کے ذریعے حل کر ے اور قانون شکنی کے ارتکاب پر ذمہ داروں کے خلاف قانون کے تحت کاروائی کی جائے گی۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے منگل کے روز اپنے دفتر میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔انھوں نے کہا کہ ضلع میں امن و امان کا قیام انتظامیہ کے تمام افسران دن رات کام کر رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ ضلع میں امن کو برقرار رکھنے کیلئے کسی کو بھی قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔صحافی کے ایک سوال کے جواب میں ڈپٹی کمشنر کا کہنا تھا کہ بعض لوگوں کی جانب سے اپنے مابین پائے جانے والے تنازعات کے حل کیلئے قومی شاہراہوں کی بندش قطعاََ برداشت نہیں کیا جائے گا اور اس ضمن میں پلئی کے مقام پر سوات ایکسپریس وے کو بند کرنے پر انتظامیہ نے سخت اقدام اٹھایا ہے اور اس فعل میں ملوث 16 افراد کو قانون کے مطابق گرفتار کرکے جیلوں میں بھیج دیا گیا ہے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں