0

تخت بھائی میں زراعت زمینوں پر لینڈ مافیہ کا قبضہ

سخاکوٹ (مانند نیوز ڈیسک) تحصیل تخت بھائی میں زراعت کی زمین پر تیزی کے ساتھ غیر قانونی ٹاون پہ ٹاون بن رہے ہیں لینڈ مافہیا نے تحصیل تخت بھائی میں انت مچا رکھی ہے ایگرکلچر کی سینکڑوں ایکڑ پر مشتمل زمینوں میں بڑے بڑے بلڈنگ بن چکے ہیں کسی بھی ٹاون میں نہ تو گرین بلٹ ہوتا ہے اور نہ کوڑا دان کے لئے جگہ ہوتا ہے تمام تر گندگی لوگ سڑکوں کے کناروں میں ہی ڈال دیتے ہیں بڑے بڑے ٹاونوں میں رہائش پذیر افراد کے لئے مردہ دفنانے کے لئے جگہ بھی نہیں ہوتا عوام مجبور ہو کر میلوں میلوں دور اپنے مردوں کو دفنانے کے لئے لے جانے پر مجبور ہو جاتے ہیں لینڈ مافہیا کے سامنے مردان انتظامیہ بے بس ہو چکے ہیں تفصیلات کے تحصیل تخت بھائی کے مختلف علاقوں جن میں لوندخوڑ،شیر گڑھ،جلالہ،تورڈھیر،پیر سدو،تورڈھیر،جھنڈئی،گوجر گڑی،ساڑوشاہ،جھونگڑو،فضل اباد،ساڑوشاہ،ٹکر مزدور اباد اور تخت بھائی سٹی کے گرد نواح میں لینڈ مافہیا نے زرعی زمینوں پر غیر قانونی ٹاون پربنا رہے ہیں اور ہر ٹاون کی زمین سینکڑوں ایکڑ پر مشتمل ہوتی ہے جن میں زیادہ تر مردان کے خوانین اور نواب فیملی کی زمین شامل ہیں جن پر بڑے بڑے بلڈنگ بن چکے ہیں ضلع مردان سے تعلق رکھنے والے خوانین کی ہزاروں ایکڑ زمین پر جس میں بڑے بڑے مختلف پھلوں کے باغات تھے جن میں خوبانی، الوچہ، امرود، فارسیمن،لوکاٹ،آم،لیچی اور مالٹے کے علاوہ نارنج کی بڑے بڑے باغات تھے اور ان زمینوں پر ایک درجن سے زائد کاشتکار تھے اور کاشتکاری کرتے تھے لیکن گذشتہ دس سالوں سے سینکڑوں ایکڑ زمین کو لینڈ مافہیا نے ان سے خرید کر ان میں بڑے بڑے ٹاون شپ بنا لئے ہیں اور اج ان میں بڑے بڑے بلڈنگ نظر ارہے ہیں ان کے علاوہ شیر گڑھ لوندخوڑسے تعلق رکھنے والے درجنوں خوانین نے بھی اپنے زمینوں کو فروخت کرکے ان پر بھی ٹاون بن گئے ہیں صوبائی حکومت کے واضح احکامات کے باوجود کہ زرعی زمین پر ٹاون شپ بنانے کی اجازت نہیں دیں لیکن اس کے باوجود ائے روز تحصیل تخت بھائی میں زرعی زمینوں پر ٹاون شپ بن رہے ہیں جو کہ ایک لمحہ فکریہ ہے ان تمام ٹاون شپ نہ تو ماحولیات کو صاف رکھنے کے لئے کوئی بندوبست کیا ہے تمام ٹاونز میں نہ کوڑاکرکٹ کے لئے کوئی جگہ مختص کیا ہے اور نہ مردہ دفنانے کے لئے قبرستان کا بندوبست ہوتا ہے تحصیل تخت بھائی میں لینڈ مافیہا اتنا مضبوط اور طاقتور ہو چکا ہے کہ اس کے سامنے انتظامیہ بے بس نظر ارہی ہے اور چند سالوں میں تحصیل تخت بھائی کے پراپرٹی ڈیلر کروڑ پتی بن گئے ہیں جوکہ دس سال پہلے ان کے ساتھ سائیکل بھی نہیں ہوتا اج لینڈ کروزروں میں گھومتے پھیرتے ہیں

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں