0

قانونی طور پر الیکشن کمیشن رزلٹ روکنے کا مجاز نہیں، فواد چوہدری

اسلام آباد (مانند نیوز ڈیسک) وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ قانونی طور پر الیکشن کمیشن رزلٹ روکنے کا مجاز نہیں،مسلم لیگ (ن) نے اپنا موقف بدل لیا ہے، الیکشن کمیشن جانے اور وہ جانیں۔پی ٹی آئی رہنما فرخ حبیب، عثمان ڈار، اسجد ملہی کے ہمراہ انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان الیکشن کمیشن کو غیرجانبدار بنانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج مسلم لیگ نون نے پھر اپنا موقف بدل لیا ہے، پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ حکومت الیکشن میں ملوث نہیں ہے۔فواد چوہدری نے کہا کہ ہمیں الیکشن میں اصلاحات کی طرف بڑھنا ہے، اب ہم الیکٹرانک ووٹنگ لا رہے ہیں، آپ پھر کہیں کہ میں نہ مانوں اور اداروں پر چڑھائی کر دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ قانونی طور پر الیکشن کمیشن رزلٹ روکنے کا مجاز نہیں، مسلم لیگ نون کو 23 پولنگ اسٹیشنز پر اعتراض ہے تو وہاں دوبارہ الیکشن کرا لے۔فواد چوہدری کا یہ بھی کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن آزاد ادارہ ہے، ہم اس کا احترام کرتے ہیں، مسلم لیگ (ن) نے اپنا موقف بدل لیا ہے، الیکشن کمیشن جانے اور وہ جانیں۔ پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈار نے کہا کہ ن لیگ نے ہمیشہ کی طرح اپنا بیانیہ تبدیل کیا، ڈسکہ کے عظیم لوگوں نے تحریک انصاف کو ووٹ دیا، تمام نتائج یہ لوگ تسلیم کر چکے تھے، 337 پولنگ سٹیشن پر پہلے ن لیگ کو کوئی اعتراض نہیں تھا، آج الیکشن کمیشن میں ان لوگوں نے بڑا یوٹرن لیا، ڈسکہ کے لوگوں کے فیصلے کا دفاع کریں گے، الیکشن کمیشن پر ہمیں پورا اعتماد ہے۔پاکستان تحریک انصاف کے رہنما علی اسجد ملہی نے کہا کہ آر او نے اپنا بیان دے دیا ہے، ڈسکہ الیکشن بہت اچھا ہوا، جیت پی ٹی آئی کی ہوئی، جلد فیصلہ عوام کے سامنے آجائے گا، مسلم لیگ ن کے کارکنان نے حلقے کا امن و امان برباد کیا،ہم 20 پولنگ اسٹیشن پر ری پولنگ کے لیے تیار ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمارے لوگ شہید ہوئے، فیصل آباد اور شیخو پورہ سے غنڈوں کو لایا گیا، (ن) لیگ نے 23 پولنگ سٹیشن پر دوبارہ انتخاب کی درخواست کی تھی۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یہ لوگ جو کہہ رہے ہیں مان جاو، یہ لوگ الیکشن کمیشن کو لکھے گئے اپنے خط سے مکر گئے ہیں۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں