0

سینٹ کی بارہ میں سے گیارہ سیٹیں لے اُڑینگے، کامران بنگش

پشارو (مانند نیوز ڈیسک) وزیراعلٰی خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلٰی تعلیم کامران بنگش نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا سے سینٹ امیدواروں کے نام فائنل ہوچکے ہیں اور کورنگ امیدواروں کو اپنے کاغذات واپس لینے کی ہدایات جاری کی جاچکی ہیں۔ ان کے مطابق فائنل امیدواروں میں جنرل سیٹ پر شبلی فراز، محسن عزیز، لیاقت ترکئی، فیصل سلیم اور ذیشان خانزادہ پارٹی ٹکٹ پر سینٹ الیکشن لڑینگے۔ خواتین نشستوں میں فلک ناز چترالی اور ثانیہ نشتر جبکہ ٹیکنو کریٹ میں ڈاکٹر ہمایوں مہمند اور دوست محمد محسود کے نام فائنل ہوچکے ہیں۔ اسی طرح اقلیتی سیٹ پر گردیپ سنگھ کے نام پر اکتفا کیا گیا ہے جبکہ بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار تاج محمد آفریدی کو بھی پاکستان تحریک انصاف کی حمایت حاصل ہوگی۔ اس سے قبل معاون خصوصی برائے ایکسائز غزن جمال کے ہمراہ ادارے کی دو سالہ کارکردگی بارے پریس کانفرنس کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کامران بنگش کا کہنا تھا کہ سینٹ الیکشن میں بارہ میں سے گیارہ سیٹیں تحریک انصاف کی ہونگیں کیونکہ پاکستان تحریک انصاف کی نمبر گیم پوری ہے اور فتح انشااللہ پی ٹی آئی ہی کی ہوگی۔ میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے ارکان بھی رابطہ میں ہیں۔ کچھ اپوزیشن ارکان اپنے حلقوں میں ترقیاتی کاموں اور کچھ آئندہ انتخابات میں پی ٹی آئی کے ٹکٹ سے انتخابات لڑنے کے خواہاں ہیں۔ پی ٹی آئی ایم پی ایزپارٹی امیدواروں کو ضرور ووٹ دینگے، بلوچستان عوامی پارٹی کی حمایت بھی حاصل ہے۔ اور ہمارے امیداروں کو ایم پی ایز کی بھر پور حمایت بھی حاصل ہے جس کا اظہار سینٹ الیکشن میں پی ٹی آئی کی بھاری تعداد میں فتح سے ہو جائے گا۔میڈیا نمائندوں کو مخاطب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کچھ چینلز اور اخبارات نے ارکان کابینہ کی غیر حاضری سے متعلق غلط خبریں چلائیں۔ ایسی خبریں صرف افواہوں اورمن گھٹرت بیانات پر مبنی ہیں۔ کابینہ کے ارکان اور پارٹی کے ایم پی ایز قیادت کے فیصلوں سے متفق ہیں۔ اگر کسی کی ناراضگی ہے تو ایسا ہر بڑی پارٹی میں ہوتا ہے۔ اگر کسی کی تحفظات ہین تو انہیں دور کیا جائے گا۔ پاکستان تحریک انصاف جمہوری پارٹی ہے اور جمہوری رویوں پر یقین رکھتی ہے۔ سینٹ کے لئے لین دین ماضی کا حصہ اور اپوزیشن کا شیوہ ہے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں