0

الیکشن کمیشن نے وزیراعظم کے فنڈز اجرا سے متعلق پی پی کی درخواست مسترد کردی

اسلام آباد (مانند نیوز ڈیسک) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ارکان اسمبلی کو فنڈز اجرا سے متعلق وزیراعظم عمران خان کیخلاف پیپلز پارٹی کی درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی۔الیکشن کمیشن میں وزیر اعظم عمران خان کے خلاف سینیٹ الیکشن میں کرپٹ پریکٹس سے متعلق پیپلزپارٹی کے رہنما نیئر حسین بخاری کی درخواست پر ممبر الیکشن کمیشن خیبرپختونخوا ارشاد قیصر کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے سماعت کی۔دوران سماعت ممبر ارشاد قیصر کی جانب سے نیئر حسین بخاری سے سوال کیا گیا کہ ضابطہ اخلاق میں وزیراعظم کا حوالہ کہاں ہے، آپ اس کیس میں عمران خان کو بطور پارٹی سربراہ لے رہے ہیں یا بطور وزیراعظم؟۔ ارشاد قیصر کا کہنا تھا کہ ضابطہ اخلاق میں وزیراعظم کی جانب سے فنڈز کے اجرا کا کوئی ذکر نہیں جبکہ ممبر الیکشن کمیشن بلوچستان نے کہا کہ ضابطہ اخلاق میں صرف صدر اور گورنرز کا ذکر ہے، وزیراعظم کا نہیں۔سماعت کے دوران پی پی رہنما نیئر بخاری کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے سینیٹ الیکشن شیڈول کے اعلان کے بعد ارکان اسمبلی سے ملاقاتیں کیں، وزیر اعظم نے الیکشن ایکٹ کے سیکشن 181 کی بھی خلاف ورزی کی، عمران خان نے الیکشن کمیشن کی بھی توہین کی۔درخواست گزار نیئر حسین بخاری  نے کہا کہ بادی النظر میں یہ کرپٹ پریکٹس کا کیس ہے، تحریک انصاف کے چار ارکان اسمبلی نے ٹی وی پروگرام میں فنڈز لینے کا اعتراف کیا، الیکشن کمیشن عمران خان اوراعتراف کرنے والے چار ارکان کو طلب کریں، ایم این ایز اور وزیراعظم کو نوٹسز جاری ہونے چاہئیں۔نیئر حسین بخاری نے کہا کہ سینیٹ الیکشن میں پی ٹی آئی نے الیکشن ایکٹ کی خلاف ورزی کی۔جس پر ارشاد قیصر کا کہنا تھا کہ اسی طرز کا مرتضی جاوید کا کیس بھی فکسڈ ہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے بھی سوال کیا گیا کہ یہ کیس سپریم کورٹ میں بھی تھا اس کا کیا بنا؟۔نیئر بخاری نے کہا کہ وہاں حکومت نے فنڈز کے اجرا کی خبر کو غلط قرار دیا تھا، وزیراعظم نے سینیٹ انتخابات کے دوران ارکان کو فنڈز دے کر کرپٹ پریکٹس کی، وزیر اعظم نے ہر رکن کو 50کروڑ روپے کے فنڈز دینے کی یقین دہانی کروائی تھی۔نیئر بخاری نے کہا کہ جب الیکشن شیڈول کا اعلان ہوجائے تو کسی ڈیویلپمنٹ اسکیم کا اعلان نہیں کیا جاسکتا۔بعد ازاں الیکشن کمیشن کی جانب سے وزیر اعظم عمران خان کے خلاف درخواست پر قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔بعد ازاں الیکشن کمیشن نے پیپلز پارٹی کی درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں