0

شانگلہ میں سرکاری ملازمین سڑکوں پر نکل ائے

 الپوری (مانند نیوز ڈیسک) شانگلہ میں سرکاری ملازمین سڑکوں پر نکل ائے،ملازمین کا معاشی قتل بند کرو،تنخواہوں میں اضافے سمیت حقوق لینے کیلئے ہر قربانی دینے کو تیار ہیں،حکومت کے خلاف شدید نعرہ بازی ملازمین نے جمعہ تک کا ڈیڈلائن دیا ہے اگر مطالبات تسلیم نہ کی گئی تو پھر اس الپوری چوک میں دھرنا دیں گے اور اس وقت تک ہمارا احتجاج مطالبات کی منظوری تک جاری رہے گا۔شانگلہ میں سرکاری ملازمین کا تنخواہوں میں اضافے کیلئے احتجاج،واک اور الپوری میں چوک میں جمع ہوکر حکومت کے خلاف نعرہ بازی کرتے رہے اور تنخواہوں میں اضافے کا مطالبہ کررہے تھے۔سرکاری ملازمین نے حکومت کوکل تک ڈیڈ لائن دیا ہے اگر مطالبات تسلیم نہ کی گئی تو احتجاج جاری رہے گا اور الپوری میں چوک میں دھرنا دینے کا اعلان بھی کردیا دھرنے سے آل کلاس فور ملازمین کے صدرفضل ہادی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے ساتھیوں کو پشاور میں بدترین تشددکا نشانہ بنایا گیا ان کو گرفتار کر کے جیلوں اور تھانوں میں بند کردیا گیاہے ہمارے قائدین ہماری حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں ہم ان کے شانہ بہ شانہ ہوں گے اور کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔مظاہرین سے ایپکا شانگلہ کے چیئرمین میاں محمد اقبال نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پشاور میں ملازمین کے ساتھ جو سلوک روارکھا ہم اس کے پرزورمزمت کرتے ہیں انھوں نے گرفتارملازمین کے فوری رہائی کامطالبہ کیاہمارااحتجاج پرامن ہے اور تنخواہوں میں اضافے کیلئے ہیں سرکاری ملازمین کا جائز مطالبہ ہے کہ وفاقی حکومت نے 25فیصد تنخواہوں میں اضافے کا اعلامیہ جاری کردیا ہے تاہم صوبائی حکومت کی جانب سے اعلامیہ جاری نہیں کیا جارہا ہے مہنگائی نے عوام کے ساتھ ساتھ ملازمین کو بھی متاثر کردیا ہیہم صرف ملازمین کے حقوق کیلئے نکلے ہیں۔ وفاق کی طرح صوبائی حکومت ملازمین کو 25فیصداضافے کانوٹیفکیشن کرکے ملازمین کو ریلیف دیں احتجاجی مظاہرے سے دیگر تنظیموں کے قائدین،عہدیداران نے بھی خطاب کیا۔ ادھر پشاور دھرنے میں شانگلہ سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں ملازمین سمیت آل گورنمنٹ ایپلائیز گرینڈ الائنس کے قائدین اور عہدیداران کثیر تعداد میں شریک ہیں۔۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں