0

شانگلہ انتظامیہ کا سستا بازار عوام اور دکانداروں کیلئے دردسر بن گیا

  الپوری (مانند نیوز ڈیسک) شانگلہ انتظامیہ کا سستا بازار عوام اوردکانداروں کیلئے دردسر بن گیا، خود ساختہ نرخ سے مہنگائی کا طوفان برقرار۔دکاندار من مانی ریٹس وصول کررہے ہیں۔سستے بازار انتظامیہ عوام کے انکھوں میں دول جھونک رہے ہیں،قصائیوں کا گوشت بھی باسی۔کم گوشت زیادہ ہڈی۔مختلف بازاروں میں مقررہ نرخ سے تجاوز۔یوٹیلیٹی سٹوروں میں حکومت کی رعایتی قیمتوں کا اشیاء خردنی ناپید۔گھی،چینی سمیت دیگر اشیاء غائب۔عوامی حلقوں کا ضلع بھر کے علاقوں میں خود ساختہ مہنگائی اور یوٹیلیٹی سٹوروں میں قلت پر کاروائی کامطالبہ۔مختلف بازاروں میں بڑا،چھوٹاگوشت اور مرغی کی قیمتوں سمیت پھلوں،کباب،پکوڑے،سموسے،سبزیوں اور دودھ کی قیمتوں میں خودساختہ اضافے نے روزہ داروں کو مشکلات میں ڈال دیا۔شانگلہ میں سستہ بازار بھی برائے نام،حکومت کی جانب سے کوئی سبسڈی نہیں دی گئی تو دوکاندار کیسا مہنگا ہوا سامان سستے داموں میں بیچ سکتے ہیں یہ صرف برائے نام فوٹو سیشن ہے۔افسران سستہ بازاروں کا چکر لگاکر تصویریں کھینچ کرچلے جاتے ہیں۔کسی کو اشیائی خردنی مہنگے داموں ملے تو وہ کیسے رعایتی ریٹو پر بھیچ سکتا ہے،دکانداران بھی برس پڑے۔ماہ رمضان میں شانگلہ میں خودساختہ قیمتوں اور قلت پرعوامی حلقوں کا شدید ردعمل۔عوام کا دیگر اشیاء اورضلع بھر کے مختلف بازاروں میں کاروائی کرنے کا مطالبہ۔ضلعی انتظامیہ شانگلہ کی جانب سے لیلونئی میں سستا بازار لگایا گیا ہے۔دکاندار من مانی ریٹس وصول کررہے ہیں،سستا بازار ایسی جگہ پر واقع ہے جہاں ہروقت لوگوں کا رش ہوتا ہے۔عوامی حلقوں اور دوکاانداروں کیلئے ریلیف کے بجائے تکلیف کا سبب بنا ہوا ہے۔انتظامیہ نے صوبائی حکومت کی ہدایات کی روشنی میں سستا بازا کا اہتمام کیا جسکا مقصد عام عوامکو ریلیف اور سستے ریٹس پر اشیاء خردنوش فراہم کرنا تھاا لیکن دوکانداروں کا کہنا ہے کہ ان کو کسی قسم کی سبسڈی نہیں دی گئی ہے اور ان کو اپنے دکانوں سے اُٹھا کر غیرموذون جگی پر بیٹھالیا گیا ان دکانوں میں زیادہ تر دکانیں سبزیوں،فروٹ،چکن،مچھلی کی ہیں،دکانوں کیلئے مختص شدہ جگہ گاڑیوں کے اڈے میں ہے جو انتہائی گندہ ہے۔ایس او پیز پر عمل درآمد نہیں ہو رہا،بارش کے دنوں میں اشیاء خردنوش کیچڑالود ہوجاتے ہیں اور خراب ہورہے ہیں۔ادھر ایس او پیز کا کائی خاص خیال نہیں رکھا جارہا نہ دکاندارماسک لگا رہے ہیں اور نہ گاہک جس سے کرونا وائرس بڑھنے کا خطرہ ہے۔ سستا بازاار عذاب بازار بن چکا ہیں۔عوام اور دکانداروں کا مطالبہ کیا ہے کہ سستا بازار اور سبزی منڈی کو اپنی پرانی جگی منتقل کیا جائے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں