0

گلوبل وارمنگ سے بچا ؤکیلئے ہر کسی کو کردار ادا کرنا ہوگا، عمران خان

اسلام آباد (مانند نیوز ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ گلوبل وارمنگ سے بچا ؤکیلئے ہر کسی کو کردار ادا کرنا ہوگا، پاکستان دنیا کے ان10ملکوں میں شامل ہے جہاں ماحولیاتی آلودگی سب سے زیادہ ہے۔ ان خیالات کااظہار وزیر اعظم عمران خان نے گرین فنانسنگ میں جدت کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ کاربن مادوں کے پھیلاؤ میں پاکستان کا حصہ ایک فیصد سے بھی کم ہے تاہم پاکستان ان ممالک میں شامل ہے جن کو ماحولیاتی آلودگی سے شدید خطرہ لاحق ہے۔ قصور ہمارا نہیں ہے، قصور تو ان بڑے، بڑے ممالک ہے جو کاربن مادوں کے پھیلاؤ کا باعث ہیں تاہم نقصان ہمارے جیسے ملکوں کا زیادہ ہوتا ہے۔ امریکی صدر جو بائیڈن انتظامیہ نے اس جانب سوچا ہے اور اس معاملہ پر توجہ دینے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ اس سے پہلی امریکی انتظامیہ دنیا میں ماحولیاتی آلودگی کے بڑھنے کے  معاملہ پر سوچ ہی نہیں رہی تھی۔ پاکستان اس میں پوری لیڈ لے گا کیونکہ یہ پاکستان کی بہت بڑی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے لئے ضروری ہے کہ ہم نے 10ارب درخت لگانے کا جو ہدف مقرر کیا ہوا ہے اس کو پہنچیں اور اس کی وجہ یہ ہے کہ اگر ہم نے اپنی آنے والی نسلوں کے مستقبل کو محفوظ بنانا ہے تو ہمیں ملک کو گلوبل وارمنگ سے بچانے کے لئے اپنا بھر پورکرداراداکرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا کے ان10ملکوں میں شامل ہے جہاں ماحولیاتی آلودگی سب سے زیادہ ہے۔ بہت ضروری ہے کہ ہم نیشنل پارکس  بنائیں، درخت اگائیں اور شہروں میں درخت لگائیں جس طرح میاواکی ہے۔ چولستان میں صحرا بڑھتا جارہا ہے اور اس کو روکنے کے لئے جاپانی تکنیک قبوکی سمیت تمام تکنیکس ہمیں استعمال کرنا پڑیں گی۔ کئی ملک بہت آگے نکل چکے ہیں اور چین اس حوالے سے بہت آگے نکل چکا ہے۔ چین نے پورا ایک گرین سٹی شہربنایا ہے جس میں سب کچھ ماحول دوست ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب تک ہم نے پاکستان کو اللہ تعالیٰ کی دی ہوئی نعمتوں کی پرواہ نہیں کی اور اب یہ وقت ہے کہ ہم اس پر پورا زور لگائیں۔انہوں نے کہاکہ پاکستان میں گذشتہ 20سال کے دوران مینگرووزکے جنگلات بڑھے ہیں جبکہ ہمارے دیگر تمام پرانے جنگلات گذشتہ60،70سال میں تباہ ہوئے ہیں۔ پہلی دفعہ2013میں خیبر پختونخوا نے بلین ٹری سونامی کے ذریعے کوشش کی کہ ہم واپس اپنے جنگلات کو اگانا شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ اب ہمارے ملک میں بہت آگاہی آگئی ہے اور سکولوں میں بچوں میں بہت آگاہی آگئی ہے اور اسے ہم نے مزید بڑھانا ہے کہ ہمارا سارا ملک  اپنے بچوں کا مستقبل ٹھیک کرنے کے لئے اس طرف لگے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا نے یہ نہیں سوچا کہ آگے کیا ہوگا، ہمارے نبیﷺ نے  1500سال پہلے کہا تھا کہ اگلی دنیا کے لئے اس طرح جیو کہ آپ نے کل مر جانا ہے لیکن اس دنیا کے لئے اس طرح جیو کہ آپ نے ہزار سال زندہ رہنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کو20سال پہلے گلوبل وارمنگ کی فکر پڑی۔ بل گیٹس جیسے لوگ اس معاملہ پر اب بات کررہے ہیں اور وہ سمجھ گئے ہیں کہ اگر آج ہم نے اس دنیا کا دھیان نہ رکھا اور کوشش نہ کی تو کوئی ایسا وقت بھی آئے گا کہ ہم کچھ کر بھی نہیں سکیں گے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں