0

ہماری زمین کو غیرمقامی افراد کو لیز پر دینا ظلم اور ناانصافی ہیں، شیرخان قبیلہ

جمرود (مانند نیوز ڈیسک) شیرخان خیل قبیلے کا تاریخی باب خیبر پر اپنے مطالبات کے حق میں احتجاج اور جمرود پریس کلب میں پریس کانفرنس کیا۔شیر خان خیل قبیلے کے سرکردہ مشران ملک محمد اللہ،حاجی فاروق شیرخان خیل،ملک عبدالظاہر،ملک یاحید،حاجی مزمل،احمد یار،احسان شاہ و دیگر موجود تھے انہوں نے کہا کہ جمرود فوجی قلعہ کے گردونواح کی زمین شیرخان خیل قبیلے کی ملکیت ہے،شیرخان خیل قبیلہ 1828ء سے یہاں آباد ہے پاک فوج کی طرف سے غیر مقامی افراد جنکا تعلق جانی خیل قبیلے سے ہے، کو زمین کا لیز دینا ظلم ہے،اور قبائیلی روایات کی پا مالی ہے اس قسم کے اقدامات سے قبیلوں کے درمیان ٹکراو اور تصادم کا خطرہ ہے۔انہوں نے کہا کہ جمرود قعلے سے باہر زمین پر آرمی کے ساتھ انکا عدالت میں مقدمہ جاری ہے جس پر عدالت عالیہ سے سٹے بھی ہے۔انکا کہنا تھا کہ جاری مقدمے کے دوران کسی غیر مقامی شخص کو زمین لیز پر دینا توہین عدالت ہے،انہوں نے کہا کہ آگر عدالتی فیصلہ پاک آرمی کے حق میں آتی ہے، تو بھی قومی اصولوں اور قبائیلی روایات کے مطابق کسی دوسرے قبیلے سے تعلق رکھنے والوں کو حکومت کا کوئی بھی ادارہ مراعات یا زمین کا لیز نہیں دے سکتا،اس قسم کے اقدامات سے قبائیلیوں کے درمیان تنازعات جنم لے رہے ہیں،جو علاقائی آمن و آمان کے لئے بڑا خطرہ ہے،انہوں نے حکومت،وزیر اعظم پاکستان، عسکری قیادت، چیف آف آرمی سٹاف کورکمانڈر پشاور اور آئی جی ایف سی سے اپیل کی ہے کہ عدالتی فیصلہ تک زمین کا لیز منسوخ کیا جائیاور شیرخان خیل قبیلے سے مشاورت کئے بغیر کوئی ایسا اقدام نا کیا جائے جو آمن کے لئے خطرہ ہو۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں