0

صوبائی دارلحکومت پشاور میں گرانفروشوں کے خلاف کارروائیوں میں تیزی

 پشاور (مانند نیوز ڈیسک) صوبائی دارلحکومت پشاور میں ضلعی انتظامیہ روزانہ کی بنیاد پر بازاروں کا معائنہ کر رہی ہے اور گرانفروشی، سرکاری نرخ نامے کی عدم موجودگی، ملاوٹ اور صفائی ناقص صورتحال پر قانونی کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے۔ اس حوالے سے پیر کو اسسٹنٹ کمشنر عمر اویس کیانی نے چارسدہ روڈ پر ریسٹورنٹس، قصاب، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر عظمیٰ مکرم نے کوہاٹ روڈ پر مختلف علاقوں میں قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر عادل وسیم نے گلبہار کے علاقے میں قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر محمد شفیق آفریدی نے فارسٹ بازار میں قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر انور اکبر خان نے جی ٹی روڈ پر قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر حبیب اللہ نے پشتخرہ روڈ پر قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر محمد جواد خان نے چمکنی کے علاقے میں قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر کاشف جان نے زریاب کالونی میں قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر محمد اظہر خان نے پھندو روڈ اور دیگر علاقوں میں قصابوں،شیر فروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیاجبکہ ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر اعزاز احمد نے حیا ت آباد کی مارکیٹوں میں قصابوں، شیرفروشوں اور دیگر دکانوں کا معائنہ کیا۔کاروائیوں کے دوران پشاور کے مختلف بازاروں سے مجموعی طور پر86 گرانفروشوں کو گرفتار کر لیا گیا جن میں 24قصاب، 19شیر فروش اور 43دیگر دکاندار شامل ہیں۔ ان گرفتار افراد کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ واضح رہے کہ انتظامی افسران صبح صادق کے وقت منڈیوں کا دورہ کرتے ہوئے بولی کے عمل کے نگرانی کے بعد سرکاری نرخ نامہ جاری کرتے ہیں اور بعد میں پشاور بھر میں سرکاری نرخ نامے پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جاتا ہے۔ڈپٹی کمشنر پشاور کیپٹن (ر) خالد محمودنے انتظامی افسران کو بازاروں کا مسلسل دورہ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے گرانفروشوں سے کوئی رعایت نہ کرنے کی ہدایت کی ہے جبکہ گرفتار دکانداروں کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں