0

شمالی علاقہ جات میں سیاحت کے فروغ کیلئے مزید اقدامات کرینگے، عمران خان

ناران (مانند نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہشمالی علاقہ جات میں سیاحت کے فروغ کیلئے مزید اقدامات کرینگے، سوئٹرزلینڈ ہمارے شمالی علاقوں کا آدھا ہے اور ان کو سیاحت سے 80ارب ڈالرز ملتے ہیں اور ہمارے سارے ملک کی ایکسپورٹس مشکل سے 25ارب ڈالرز ہیں۔ ۔بدقسمتی سے جو ہمارے بزرگ تھے انہوں نے پاکستان سے انصاف نہیں کیا، ہمارے درختوں اور جنگلات کی تباہی کی اور انہوں نے یہ نہیں سوچا کہ وہ آنے والی نسلوں کے لئے وہ بھی ویسا پاکستان چھوڑ کر جائیں جیسا ان کو ملا تھا۔ ان خیالات کااظہار وزیر اعظم عمران خان نے دورہ ناران کے دوران ٹائیگر فورس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وزیر اعظم عمران خان  نے کہا کہ میں خوشی کا اظہار کرنا چاہتا ہوں کہ میں نے اوپر سے پہلے سارا علاقہ دیکھا تو مجھے بڑی خوشی ہوئی، پہلے ہم آتے تھے تو ہمیں اوپر سے درخت کٹے ہوئے نظر آتے تھے، اللہ کا شکر ہے اب بہت زیادہ درخت اگائے گئے ہیں۔ میں نے آج کمشنر ریاض خان سے پوری بریفنگ لی اور مجھے بڑی خوشی ہوئی کہ ہمارے ریاض خان جیسے بیوروکریٹس جو ہماری کلین اور گرین پاکستان کی وژن ہے، جو ہماری پاکستان کے حوالے سے سوچ ہے کہ ہم نے انشاء اللہ اپنے نوجوان جو ہمارے سامنے بیٹھے ہیں اور ہماری جو آنے والی نسلیں ہیں ہم نے ان کے لئے وہ پاکستان چھوڑ کر جانا ہے کہ ساری ہمارے آنے والی نسلیں ہمارا شکریہ ادا کریں گی کہ ہم نے ان کی پرواہ کی۔ انہوں نے کہاکہ بدقسمتی سے جو ہمارے بزرگ تھے انہوں نے پاکستان سے انصاف نہیں کیا، ہمارے درختوں اور جنگلات کی تباہی کی اور انہوں نے یہ نہیں سوچا کہ وہ آنے والی نسلوں کے لئے وہ بھی ویسا پاکستان چھوڑ کر جائیں جیسا ان کو ملا تھا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے بڑی خوشی ہوئی کہ ریاض خان کاغان ویلی کے لئے آگے جاکرجو منصوبہ بنا رہے ہیں اگر اس پر عملدرآمد کر گئے اور آپ کا سب سے بڑا چیلنج اس پر عملدآمد کرنا ہو گا، میں ساری دنیا میں پھرا ہوں میں نے سوئٹزر لینڈ دیکھا ہے، آسٹریا دیکھا ہے جو دنیا اور یورپ کی خوبصورت ترین جگہیں مانی جاتی ہیں میں آپ کو یقین دلاتا ہوں پاکستان میں جس طرح کی خوبصورتی ہے یہ صرف کاغان ویلی اوپر بابوسر تک چلے جائیں جو خوبصورتی صرف یہاں ہے شاید ہی دنیا میں کوئی ملک ملے گا جس کو اللہ تعالیٰ نے ایسی نعمت بخشی ہے، اللہ تعالیٰ کی نعمتوں کا شکر ہم اس طرح کرتے کہ اس کی نعمتوں کا دھیان رکھتے، اللہ جو نعمتیں ہمیں بخشتا ہے، شکرتوتب ہوتا ہے جب ہم ان کی حفاظت کریں۔نگہبان یا گارڈ جتنے بھی لوگ رکھنے ہیں وہ مقامی لوگوں میں رکھیں کیونکہ ان کو پتہ ہے کہ کون درخت کاٹتا ہے اور یہی ان درختوں کی صحیح حفاظت کر سکیں گے اور یہی اس سارے علاقہ میں صفائی کرسکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت ہرسال تیزی سے بڑھ رہی ہے اور کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا سب سے بڑا چیلنج یہ ہے کہ جو قانون بناتے ہیں ان پر عملدرآمد کیا جائے اور سختی سے عملدرآمد کروایا جائے۔ میں ہوٹل ایسوسی ایشن کے لوگوں سے ملا ہوں ان پر بھی پابندی لگائیں کہ وہ گندگی نہ پھیلائیں۔ حضورﷺ نے کہا کہ آدھا دین صفائی ہے، صفائی اور پاکیزگی کی ہمارے دین میں بہت بڑی اہمیت ہے۔ گندگی پھیلانے والوں کو سخت سزادیں۔ نئے پاکستان میں نئی سوچ ہے، پہلے گندگی ہر جگہ پڑی ہوتی تھی، ہم نے اپنے ملک کو صاف کرنا ہے،شمالی علاقہ جات میں سیاحت کے فروغ کیلئے مزید اقدامات کرینگے۔ دریائے کنہا ر کی جو ٹراؤٹ ہے سارے پاکستان میں اس ٹراؤٹ کو پسند کرتے ہیں۔ سیاحت سے لوگوں کو اتنا پیسہ آئے گا اور سیاحت سے لوگوں کو نوکریاں ملیں گی، سیاحت سے اتنا پیسہ آئے گا کہ ہم اتنی ترقی کر سکیں گے اور اس کا ایسا دھیان رکھ سکیں گے، سوئٹرزلینڈ ہمارے شمالی علاقوں کا آدھا ہے اور ان کو سیاحت سے 80ارب ڈالرز ملتے ہیں اور ہمارے سارے ملک کی ایکسپورٹس مشکل سے 25ارب ڈالرز ہیں۔ اب ہم نے بھی اپنے سیاحتی مقامات کا دھیان رکھنا ہے، ہم یہیں سے اتنا پیسہ کمائیں گے اور مقامی لوگوں کو سیاحت کی وجہ سے اتنی نوکریاں ملیں گی کہ ان کو علاقہ سے باہر نوکریاں ڈھونڈنے جانا نہیں پڑے گا۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں