0

چیف سیکرٹریرز اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں استحکام یقینی بنا ئیں، عمران خان

اسلام آباد (مانند نیوز ڈیسک) وزیرِ اعظم عمران خان نے صوبوں کے  چیف سیکرٹریرز کو حکم د ہے یا کہ بنیادی اشیائے ضروریہ کی قیمتوں  میں استحکام خصوصا منڈی اور پرچون میں غیر منطقی فرق کو ختم کرنے کے حوالے سے ہر ممکنہ انتظامی اقدام یقینی بنایا جائے۔وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ چینی اور گندم کی مستقبل کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے مفصل منصوبہ بندی اور بروقت اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔جبکہ وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا کہ محض انتظامی افسران کے خلاف کاروائی ناکافی ہے۔انتظامی اقدامات کے نتائج سامنے آنے چاہیں تاکہ عوام کو ریلیف میسر آئے۔پیر کے روز وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت بنیادی اشیائے ضروریہ کی طلب و رسد اور ان کی قیمتوں کے حوالے سے جائزہ اجلاس منعقدہوا۔وزیرِ اعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بنیادی اشیائے ضروریہ کی قیمتوں سے عام آدمی متاثر ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی کا تحفظ موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ قیمتوں کے استحکام کے ضمن میں اپنی ذمہ داریوں میں لغزش کے مرتکب افسران کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جا رہی ہے۔اب تک سات اسسٹنٹ کمشنرز،  مارکیٹ کمیٹیوں کے دو سیکرٹریز کو معطل جبکہ دو ڈپٹی کمشنر ز کو وارننگ دی جا چکی ہے۔وزیرِ اعظم کو بتایا گیا کہ خوردنی تیل کی قیمتوں میں کمی لانے کے لئے متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ معاملات حتمی مراحل میں ہیں۔ ان کے نتیجے میں خوردنی تیل کی قیمتوں میں دس سے پندرہ روپے فی کلو کمی کی توقع ہے۔ وزیر خزانہ شوکت ترین، وقاقی وزیر برائے صنعت وپیداوار مخدوم خسروبختیار، وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام، وزیر اعظم کے مشیر برائے داخلہ و احتساب بیرسٹر مززا شہزاد اکبر، وزیر مملکت برائے اطلاعات ونشریات فرخ حبیب، وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے تخفیف غربت سینیٹر ڈاکٹر ثانیہ نشتر، معاون خصوصیڈاکٹر  شہباز گل، معاون خصوصی برائے فوڈ سیکیورٹی جمشید اقبال چیمہ، وزیر اعظم کے پرنسپل سیکرٹری محمد اعظم خان اور دیگر حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں