0

انٹی کرپشن عدالت کی بڑی کاروائیاں، کرپشن کے تین اہم ملزمان کو جیل بھیج دیا

 پشاور (مانند نیوز ڈیسک) سرکاری زمین (سٹیٹ لینڈ) پر قائم ہندو بالمیکی قبرستان کوٹلہ سیدان ڈیرہ اسماعیل خان کی فروخت کے اہم کردار نذیر تحصیلدار پوٹے والا کی عبوری ضمانت منسوخ ، ملزم کو جیل بھیج دیاگیا۔ رشوت لیتے رنگے ہاتھوں مجسٹریٹ کی موجودگی میں گرفتار ہونیوالامحکمہ جنگلات کا فارسٹر محمد رفیق بھی ریگولر ضمانت منسوخ ہونے پر جیل یاترا پر بھیج دیاگیاجبکہ گورنمنٹ ہائی سکول کھتی میںپی ٹی سی فنڈز خوربرد کرنیوالے ملزم سابق ڈی ڈی او عبدالوہاب کی بی بی اے بھی خارج ہونے پر جیل بھیج دیاگیا۔ تفصیلات کے مطابق ایف آئی آر نمبر4مورخہ17-09-2018کے مطابق مدعی محمد اصغر چوہدری کی درخواست میں الزام لگایاگیاتھاکہ محکمہ مال کے عملہ کی ملی بھگت سے ہندو بالمیکی قبرستان واقع کوٹلہ سیدان ڈیرہ اسماعیل خان کی چھ کنال بیش قیمت اراضی بیچ دی گئی جس پر اوپن انکوائری کے ذریعے تحقیقات میں الزام درست ثابت ہونے پر حسب ضابطہ مقدمہ درج کیاگیااور مدعی کی درخواست پر اس وقت کے ڈپٹی کمشنر محمد عمیر نے عملہ مال کے ذریعے تحقیقات کرائیں اور ایک بار پھر الزام درست ثابت ہونے پر نہ صرف سٹیٹ لینڈہندو بالمیکی قبرستان کے جعلسازی سے فروخت کے تمام انتقالات منسوخ کئے بلکہ سٹیٹ لینڈ اراضی کاانتقال بنام پراونشل گورنمنٹ درج و تصدیق کرادیااور قبضہ ہندو بالمیکی قبرستان کااندراج کرایا۔مقدمہ میں نذیر تحصیلدار اور پٹواری اللہ نواز نے بی بی اے کرائی جس میں اللہ نواز پٹواری دوران مقدمہ فوت ہوگیاجبکہ تحصیلدار نذیر احمد کی بی بی اے کی گذشتہ روز سماعت پر فاضل عدالت سپیشل جج انٹی کرپشن (سائوتھ ریجن) خیبر پختونخواہ کیمپ کورٹ ڈیرہ اسماعیل خان نے ملزم کی بی بی اے خارج کرتے ہوئے اسے گرفتار کرنے کاحکم صادر فرمایاجس پر ملزم کو حسب ضابطہ گرفتار کرکے سنٹرل جیل ڈیرہ اسماعیل خان بھیج دیاگیا۔ ایک اور ایف آئی آر نمبر1مورخہ04-04-2018جرم زیر دفعہ409- 5(2)PCAت پ میں مدعی عثمان شاہین کی رپورٹ پر گورنمنٹ ہائی سکول کھتی کے پی ٹی سی فنڈز میں خوردبرد کے ملزم سابق ڈی ڈی او عبدالوہاب نے بی بی اے کرائی تاہم فاضل عدالت نے اس کی بی بی اے بھی خارج کرکے جیل بھیج دیا۔ تیسرے مقدمہ میں مجسٹریٹ کی موجودگی میں رشوت کی رقم برآمدگی کے ملزم محکمہ جنگلات کے فارسٹر محمد رفیق کا مدعی مقدمہ محمد خالد ولد مرزا علی سے راضی نامہ عدالت میں پیش کیاگیاتاہم فاضل عدالت نے ملزم کی ریگولر ضمانت کی استدعاخارج کردی اور ملزم کو جیل میں ہی رکھنے کاحکم دیا۔ کرپشن کے تین مقدمات میں ملزمان کو جیل بھیجنے کے فیصلے پر عوامی و سماجی حلقوں نے انتہائی خوشی و مسرت کااظہار کیاہے اور کہاہے کہ ڈائریکٹر انٹی کرپشن عثمان زمان کی قیادت میں انٹی کرپشن ڈیرہ اسماعیل خان ریجن کی ٹیم اسسٹنٹ ڈائریکٹر کرائمزعبدالحئی خان بابڑ اور سرکل آفیسر منہاج سکندر بلوچ کی زیر نگرانی انسداد رشوت ستانی اور انسدادبدعنوانی کیلئے نہایت تندہی سے سرگرم ہے۔ ان کی بہترین تفتیش کے نتیجہ میں کرپشن کے ملزمان جیل بھیجے گئے ہیں جس پر ڈیرہ اسماعیل خان کے عوامی و سماجی حلقے اور سول سوسائٹی ڈائریکٹر انٹی کرپشن عثمان زمان ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر کرائمزعبدالحئی خان بابڑ اور سرکل آفیسر منہاج سکندر بلوچ کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ان کی خدمات پر ایوارڈ کا مطالبہ کرتی ہے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں