0

افغانستان میں سیاسی تبدیلی کے اثرات پاکستان پر پڑیں گے، شیخ رشید

  اسلام آباد (مانند نیوز ڈیسک) وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید احمدنے کہاہے کہ  پاکستان اپنی تاریخ کے انتہائی حساس ترین مہینوں سے گزر رہا ہے، افغانستان میں رونما ہونے والی سیاسی تبدیلی کے اثرات پاکستان پر پڑیں گے۔ اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہاکہ ڈاکٹر عبدالقدیر کی نماز جنازہ پر وزارت داخلہ نے بہترین انتظامات کئے اور محسن پاکستان کو وزارت داخلہ نے سرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کیا، وزیراعظم کی ہدایات تھی کہ ڈاکٹر قدیر کی تدفین فیصل مسجد میں کی جائے لیکن گھر والوں کی مرضی کے بعد انہیں ایچ ایٹ میں سپردخاک کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ ڈالر ذخیرہ کرنے والوں کے خلاف ایف آئی اے نے گھیرا تنگ کر دیا ہے اور 5 بڑی کمپنیوں کا آڈٹ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، 88 لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے جبکہ 47 کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے، ڈالر اگر غیر قانونی طریقہ سے افغانستان بھیجا گیا تو اس پر کسٹمز کو تحقیقات کرنی چاہئے، کسٹم ڈیپارٹمنٹ وزارت داخلہ کے ماتحت نہیں، ہمارا کام صرف ہولڈنگ ہے تحقیقات کا ہے، 27 ہزار این جی اوز میں سے 91 فارن فنڈنگ میں ملوث ہیں، ان این جی اوز کی فنڈنگ کے معاملات بھی دیکھ رہے ہیں، این سی اوسی کو بدنام کرنے کیلئے جعلی انداراج کیے جارہے ہیں، ایف آئی اے کو جعلی ویکسینیشن کے خلاف کارروائی کی ہدایت کی ہے، دو پاسپورٹ کے حامل افراد 30 اکتوبر تک ایک پاسپورٹ سرنڈر کرسکتے ہیں، دو،دو شناختی کارڈ کی جرمانہ فیس 10 ہزار سے کم ہو کر 5 ہزار کردی ہے، حکومت کو سمری بھیج رہے ہیں کہ جن بارڈر پر ایف آئی اے اور کسٹم نہیں وہاں تعیناتی کی جائے اور سہولت دی جائے۔انہوں نے کہا کہ مذہب کی بنیاد پر کسی کو نہیں چھیڑیں گے، پی ڈی ایم جو کرنے جار ہی ہے یہ نہ ہو اسکے گلے پڑجائے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان اپنی تاریخ کے انتہائی احساس ترین مہینوں سے گزر رہا ہے، افغانستان میں رونما ہونے والی سیاسی تبدیلی کے اثرات پاکستان پر پڑیں گے، افغانستان کا سکون ساری دنیا کا سکون ہے۔سول ملٹری تعلقات کے حوالہ سے کوئی مسئلہ نہیں، جب بھی ٹرانسفر ہوتی ہیں،وہ معمول کے مطابق ہوتی ہیں، سول ملٹری تعلقات پر آفیشل حیثیت میں بیان نہیں دے رہا، سول ملٹری تعلقات پر فواد چوہدری اور پرویز خٹک جواب دے سکتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ان معاملات پر آفیشل حیثیت میں بیان دینے کی پوزیشن میں نہیں ہوں، بس یہ کہوں گا کہ سب معاملات ٹھیک ہیں۔  وزیر اعظم کی ہدایات پر پی ایم آفس میں افغانستان ڈیسک بنے گا، وزارت داخلہ بھی اسکا حصہ ہوگی۔انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین سے متعلق جعلی سرٹیفکیٹ کے ذریعے این سی او سی کے اقدامات کو متنازع بنانے کی کوشش کی جارہی ہے، ایف آئی اے کو ہدایت کی ہے کہ اس کے سدباب کے لیے فوری حکمت عملی تیار کریں تاکہ جعلی تاریخ یا سرٹیفکیٹ بنانے والوں کو گرفتار کیا جا سکے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں