0

ملاکنڈ میں منشیات فروشوں، اشتہاری مجرمان اور دشمن عناصر کے خلاف کاروائی

ملاکنڈ (مانند نیوزڈیسک) وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا اور چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا کے ہدایت پر ڈپٹی کمشنر و کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز الطاف احمد شیخ نے منشیات فروشوں کے خلاف مہم تیز کردی ہے۔اس ضمن میں ضلع ملاکنڈ کے دونوں ڈویژن بٹ خیلہ،درگئی کے اسسٹنٹ کمشنرز و ایڈ یشنل اسسٹنٹ کمشنرز کو منشیات فروشوں،سماج دشمن عناصر،اشتہاری مجرمان اور غیر قانونی اسلحہ رکھنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کی ہدایت کر دی گئی ہے۔اس ضمن میں تحصیل بٹ خیلہ،درگئی کے انتظامی افسران کی زیر قیادت لیویز تھانوں کے پوسٹ کمانڈرز،لیویز نفری اور لیویز انٹیلجنس اہلکاروں نے کاروائی کرتے ہوئے یکم ستمبر 2021 سے 12 اکتوبر 2021 کے دوران کل 63 منشیات فروش بشمول 03 خواتین سمگلر گرفتار کرکے ان کے قبضہ سے مجموعی طور پر 39527 گرام چرس،308 گرام آئس، 3170 گرام ہیروئن،466.5 لیٹر شراب،430 گرام افیون برآمد کرکے منشیات فروشوں کو جیل بھجوا دیا ہے۔اسی طرح غیر قانوی اسلحہ رکھنے والوں کے خلاف اپریشن کے دوران 09 ضرب کلاشنکوف،16 ضرب پستول اور مجموعی طور پر 177 روند کارتوس برآمد کر دیے گئے ہیں۔اشتہاری مجرمان کے خلاف اپریشن کے دوران 30 اشتہاری مجرمان بھی گرفتار کئے۔اسی عرصہ کے دوران 03 عدد سرقہ شدہ موٹر کاریں اور 09 عدد سرقہ شدہ موٹر سائیکلیں بھی برآمد کئے گئے اور ان کے اصل مالکان کو بلا کر باعزت طریقے سے انکی ملکیت ان کے حوالے کی گئی جس پر گاڑیوں کے مالکان نے وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا،کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز الطاف احمد شیخ اور ملاکنڈ لیویز کا شکریہ ادا کیا۔مزید برآں تھانہ کے مقام پر سیاحوں کے کوچ (کوسٹر)کو لوٹنے والے ڈکیت گروپ کو ٹریس کرکے گرفتاری کے بعد انھیں جیل بھجوادیا گیا ہے جبکہ امن و امان کو بحال رکھنے اور نقص امن سے بچنے کے حوالے سے دیگر کاروائیوں میں موٹر سائیکل ون ویلنگ کرنے والے 720 نوجوانوں کو ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی پر چالان کرکے جرمانے لگائے گئے۔ون ویلنگ کی وجہ سے خود نوجوانان اور دیگر راہ گیر و سوار زخمی ہوجاتے ہیں اور ٹریفک کی روانی بھی متاثر ہوجاتی ہے۔ون ویلنگ کرنے والے نوجوانوں کے والدین کو ہدایت کی گئی کہ وہ اپنے بچوں کو بچا کررکھیں کیونکہ وہ ون ویلنگ سے اپنے والدین اور دیگر شہریوں کیلئے پریشانی کا باعث نہ بنے۔کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز الطاف احمد شیخ نے پوسٹ کمانڈروں کو مزید کاروائیاں کرنے کی ہدایت کی۔ضلعی انتظامیہ کے مطابق ضلع ملاکنڈ میں ائس،چرس اور ہیروئن باہر اضلاع سے لائے جاتے ہیں اور منشیات سمگل کرنے والے گرفتار شدہ افراد میں سے 70% ملزمان کا تعلق ضلع خیبر،مہمند،پشاوراور چارسدہ سے ہے۔کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز نے خبردار کیاہے کہ منشیات فروشوں اورسماج دشمن عناصر کیلئے ملاکنڈ میں کوئی جگہ نہیں اور ملاکنڈ کو منشیات سمگل کرنے والوں کو گرفتار کرکے انہیں سزائیں دلوائی جائیگی جبکہ ملاکنڈ کو امن کا گہوارہ بنائیں گے ۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں