0

وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا وقت ابھی نہیں آیا، شہباز شریف

ڈیرہ غازی خان (مانند نیوز ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا وقت ابھی نہیں آیا۔ انہوں نے ڈی جی خان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے جتنے وعدے کیے، ان سے بے وفائی کی، ریاست مدینہ کے دعوے کرنے والوں نے الٹ کام کیے،خوف آتا ہے، آنے والی حکومت کس طرح تباہ حال معیشت بحال کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ مفاہمت کا بادشاہ بار بار جیل تو نہیں جاتا،پارلیمان میں (ن) لیگ کو پی پی اور اے این پی کاتعاون حاصل ہے۔انہوں نے کہاکہ 2013 سے 2018  تک نواز شریف کی قیادت میں جنوبی پنجاب کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کی،جنوبی پنجاب کی ترقی، خوشحالی کیلئے (ن) لیگ کے دور میں بہت کام کیے گئے۔انہوں نے کہاکہ ہم نے پینے کا پانی، صحت اور تعلیم کے شعبے میں جنوبی پنجاب میں بہت کام کیے،جنوبی پنجاب میں ہسپتال اور دانش سکول بنائے گئے،جبکہ تبدیلی سرکار نے تونسہ میں دانش سکول تک مکمل نہیں کیا۔ انہوں نے کہاکہ ہمارے دورمیں جنوبی پنجاب کے لیے ملازمتوں میں 33 فیصد کوٹہ تھا،اپنے دورمیں لوگوں کی فلاح وبہبود کے لیے انقلابی اقدامات کیے،اطمینان ہے کہ ہم نے جنوبی پنجاب میں لوگوں کی خدمت کی۔انہوں نے کہاکہ پیپلز پارٹی کو اتحاد میں دوبارہ شامل کرنے کا فیصلہ پی ڈی ایم ہی کرسکتی ہے، ہمارا پارلیمان میں پیپلزپارٹی اور اے این پی سے رابطہ رہتا ہے اور وہ تعاون کرتے ہیں، وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا وقت ابھی نہیں آیا،سیاست میں کوئی چیز انہونی نہیں ہوتی، سیاست میں ایک دائرے میں رہ کر ہر چیز ممکن ہے۔حکومت نے اپوزیشن کو دیوار سے لگانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی، حکومت سمجھ رہی ہے کہ آنے والا وقت اس کے لیے خطرناک ہے،آنے والے دنوں میں حکومت کو سپیس نہیں دیں گے،پی ٹی آئی اپنے آپ کو این آر او دینے کے لیے نیب آرڈیننس لائی ہے، عمران خان کہتے تھے کہ وہ مرجائیں گے مگر این آر او نہیں دیں گے، عمران خان نے خود کو اور کابینہ کو این آر او دے دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ پارٹی قائد نواز شریف کا لندن میں علاج ہو رہا ہے، صحت مند ہوتے ہی واپس آئیں گے،ان کا برطانیہ میں میڈیکل ٹریٹمنٹ ہوگا،وہ پارٹی کے تاحیات قائد ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہمارے دور میں ٹی ایل پی کے دھرنے میں عمران خان کہتے تھے کہ وہ ان کو سپورٹ کرتے ہیں،ہمارے دورمیں شاہ محمود قریشی ٹی ایل پی کے دھرنوں میں شرکت کرتے تھے،ٹی ایل پی کے دھرنوں میں پی ٹی آئی شرکت کرتی تھی۔انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت میں ٹی ایل پی نے لانگ مارچ یا دھرنے دیئے توہم نے سپورٹ نہیں کیا،پہلے ہی کہا تھا جو کچھ سڑکوں پر ہورہا ہے وہ افسوسناک ہے، بیٹھ کرحل کرنا چاہیے، ہم نے موجودہ صورت حال کا سیاسی فائدہ نہیں اٹھایا۔ا س موقع پر صحافیوں کی جانب سے اپوزیشن لیڈر سے متعلق بلاول بھٹو کے بیان پر پوچھے گئے سوال پر شہباز شریف نے نوکمنٹس کا جواب دیا۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں