0

ہنگو ،نئی حلقہ بندیاں کسی صورت قبول نہیں، مفتی عبید اللہ

ہنگو (مانند نیوز ڈیسک) نئی حلقہ بندیاں کسی صورت قبول نہیں، ہنگو اور اورکزئی کے عوام کے حق کو سلب کرنے کی ہر کوشش ناکام بنائیں گے۔ضلع اورکزئی اور ضلع ہنگو پر مشتمل ایک ہی قومی اسمبلی نشست سراسر زیادتی کے مترادف ہے، فاٹا انضمام پر قائد جمعیت کی مخالفت دور اندیشی کا عکاس عمل تھا۔ فاٹا کے متعلق جمعیت کا موقف حقیقت پسندانہ اور اصولی ہے۔جمعیت علما اسلام پارلیمنٹ میں اورکزئی کی قومی نشست کے خاتمے کے خلاف آواز بلند کرے گی۔ ان خیالات کا اظہار جمعیت علما اسلام خیبر پختون خواہ کے نائب امیر اخونزادہ مفتی عبید اللہ نے ہنگامی میڈیا  کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اورکزئی ضلع کی قومی نشست کو نئی حلقہ بندیوں کی آڑ میں ختم کرنا اور ہنگو اور اورکزئی کی واحد نشست ڈیکلئیر کرنا ایک نا عاقبت اندیشانہ اور غیر منصفانہ فیصلہ ہے جسے کسی صورت قبول نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا اور قبائل نے انتہائی مشکل حالات کا سامنا کیا ہے اور ملک و قوم کے لیے قربانیاں دی ہیں۔ ایسے میں ان کے حقوق کا تحفظ ریاست اور ریاستی اداروں کی ذمہ داری ہے۔ مفتی عبید اللہ نے کہا کہ فاٹا انضمام کی جمعیت نے اصولی بنیادوں پر مخالفت کی اور انضمام کے بعد کے حالات سب کے سامنے ہیں۔ انہوں نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے حکام سے مطالبہ کیا کہ نئی حلقہ بندیوں میں ہنگو اور اورکزئی اضلاع کے حقوق کو سلب نہ کیا جائے اور اورکزئی کی علیحدہ قومی نشست کو بحال رکھا جائے، بصورت دیگر سخت احتجاج کیا جائے گا۔ اخونزادہ مفتی عبید اللہ نے کہا کہ جمعیت کے پارلیمنٹیرین فاٹا کے حق کے لیے قومی اسمبلی اور سینٹ میں آواز بلند کریں گے اور ہم فاٹا کے اضلاع کے ساتھ زیادتیوں کا راستہ روکنے کے لیے ہر فورم پر جدوجہد کریں گے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں