0

محکمہ لائیوسٹاک کے سینکڑوں وٹرنری اسسٹنٹس اپنے حق کے حصول اور مطالبات تسلیم کرنے کیلئے سڑکوں پر نکل آئے

نوشہرہ (مانند نیوز ڈیسک) محکمہ لائیوسٹاک کے سینکڑوں  وٹرنری اسسٹنٹس اپنے حق کے حصول اور مطالبات تسلیم  کرنے کیلئے سڑکوں پر نکل آئے ، محکمہ لائیوسٹاک کے وٹرنری اسسٹنٹس کا احتجاجی مظاہرہ مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جس پر وٹرنری اسسٹنٹ کو سکیل 14-16-اور سکیل 17دینے کے مطالبات درج تھے مظاہرین نے میں بھی محکمہ لائیو سٹاک کے ملازمین کااپنے مطالبات کے حق کے لیے صوبائی حکومت کے خلاف  نوشہرہ پریس کلب کے سامنے  صوبائی حکومت کے خلاف نعرے بازی بھی کی،خیبر پختونخواہ حکومت ہمارے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے محکمہ لائیوسٹاک کے وٹرنری اسسٹنٹ کو  سندھ حکومت کی طرز پر سکیل14-16اور 17میں  اپگریڈکریں بصورت دیگر ہم  خیبر پختونخواہ حکومت کے خلاف  صوبائی اسمبلی کے سامنے دھرنا دینے پر مجبور ہوجائے گے۔اس سلسلے میں محکمہ لائیوسٹاک کے وٹرنری اسسٹنٹ کی تنظیم پیرا وٹرنری ایسو سی ایشن صوبائی جنرل سیکرٹری شبیر جان، ضلع صدر نوشہرہ اقبال سلیم، جنرل سیکرٹری امتیاز ترین اور سینئر نائب صدر مقبول احمد نے اپنے دیگر درجنوں ساتھیوں کے ہمراہ نوشہرہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی  مظاہرے اور بعد ازاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ لائیوسٹاک کا وٹرنری اسٹنٹ اس صوبے کی ریونیو میں اضافے میں اہم و کلیدی کردار ادا کرتا ہے اور یہی وٹرنری اسسٹنٹس ماہانہ ریونیو کی مد میں لاکھوں روپے قومی خزانے میں جمع کرتا ہے لیکن اس کے باوجود محکمہ لائیو سٹاک کا وٹرنری اسسٹنٹ سکیل آپ گریڈیشن جیسے  بنیادی حق سے محروم ہے کیوں انہوں نے مزید کہا کہ وٹرنری اسسٹنٹس صوبے کے دشوار گزار علاقوں میں ڈیوٹیاں سرانجام دیتے ہیں اور چیٹ فیس کی مد میں سالانہ کروڑوں روپے قومی خزانے میں جمع کرتے ہیں صرف یہی نہیں بلکہاسی وٹرنری اسسٹنٹس کی محنت کی وجہ سے صوبہ خیبر پختونخواہ پاکستان بھر میں مصنوعی نسل  کشی میں دوسرے نمبر پر ہے اورپاکستان دنیا بھر میں دودھ کی پیداوار میں دوسرے نمبر پر آیا ہے یہ صرف اور صرف اسی وٹرنری اسسٹنٹس ہی کی محنت،لگن کا نتیجہ ہے لیکن اس کے باوجودمحکمہ لائیوسٹاک خیبر پختونخواہ کے  وٹرنری اسسٹنٹس سکیل آپ گریڈیشن سے محروم انہوں نے کہا کہ ہم خیبر پختونخواہ حکومت سے وٹرنری اسسٹنٹس کو سکیل  14,16اور 17میں آپ گریڈ کرنے کے حکامات جاری کریں، ہمارے مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو ہم خیبر پختونخواہ حکومت کے خلاف پشاور میں صوبائی اسمبلی کے سامنے احتجاجی دھرنا دینے پر مجبور ہوجائیں گے۔ا

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں