0

بونیر ،ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے وکلاء برادری کا احتجاجی واک

بونیر (نمائندہ مانند) صوبائی بار کونسل کی ہدایات پر ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے وکلاء برادری نے پشاور واقعے کے خلاف ڈسٹرکٹ بار روم سے نیشنل بنک آف پاکستان چوک تک احتجاجی واک کیا ۔احتجاجی وکلاء نے بازوؤں پر کالی پٹیاں باندھ رکھی تھی ۔اور ضلعی انتظامیہ کے خلاف اور قانون کی بالادستی کے لیے فلک شگاف نعرے لگاتے رہے۔مین پیر بابا ڈگر مردان شاہراہ  نیشنل بنک چوک میں ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ منعقد کیا ۔احتجاجی مظاہرے سے ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر سید جمیل شاہ ایڈوکیٹ ،جنرل سیکریٹری محبوب الرحمان ایڈوکیٹ ،نائب صدر محمد اسرار خان ایڈوکیٹ ،طارق ایڈوکیٹ اور گل باچا ایڈوکیٹ نے خطاب کرتے ہوئے کہا ۔کہ ہمارا احتجاج پر امن اور قانون کی بالادستی کے لیے ہے ۔مقررین نے ضلعی انتظامیہ کے افسران اور ٹی ایم او ڈگر پر الزام لگایا ۔کہ ان افسران کی وجہ سے علاقے میں کرپشن کا بازار گرم ہے ۔مقررین نے کہا ۔کہ ضلعی انتظامیہ اختیارات کا غلط استعمال کرتی ہے  ۔اور سیاسی اثر و رسوخ کی وجہ سے کرپشن میں مبینہ طور پر ملوث افسران گذشتہ کئی سالوں سے منافع بخش سیٹوں پر براجمان ہیں ۔انہوں نے کہا ۔کہ ضلعی انتظامیہ کے افسران نے کورنا ،سیلاب اور زلزلہ فنڈز میں مبینہ طور پر بڑے پیمانے پر کرپشن کی ہے ۔وکلاء برادری کرپشن میں ملوث افسران کو عوام کے سامنے لاکر بے نقاب کریں گے ۔انہوں نے کہا ۔کہ اب ہم نے مصمم ارادہ کرلیا ہے ۔کہ جن افسران کے خلاف گذشتہ کئی سالوں سے کرپشن میں ملوث ہونے کی انکوائریاں چل رہی ہیں ۔اور ان انکوائریوں کو ضلعی افسران نے ملی بھگت کرکے رکوادیے ہیں۔انہیں منطقی انجام تک پہنچا کر دم لیں گے ۔انہوں نے کہا ۔کہ ضلعی افسران ہر ماہ 12 لاکھ روپے کی پٹرول کا استعمال کرتے ہیں ۔جبکہ ان افسران کی کارکردگی صفر ہے۔اور ان افسران کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے عوام کے مسائلِ میں روز افزوں اضافہ ہورہا ہے۔جو ناقابل برداشت ہے۔واضح رہے۔کہ ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے وکلاء نے پشاور میں پیش انے والے واقعے کے خلاف چوتھے روز بھی عدالتوں میں پیش نہ ہوئے۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں