0

ہنگو ،نئی نسل کو منشیات کے بے تحاشا نقصانات سے بچانا وقت کا تقاضا ہے، علمائے کرام

  ہنگو (مانند نیوز ڈیسک) نئی نسل کو منشیات کے بے تحاشا نقصانات سے بچانا وقت کا تقاضا ہے علمائے کرام،سیاسی سماجی شخصیات،  انتظامیہ، سول کمیونٹی اور پولیس کو مل کر منشیات کا راستہ روکیں۔ منشیات کا قلع قمع کر کے ہی ہم صحت مند معاشرے کی تشکیل کے خواب کو شرمندہ تعبیر کر سکتے ہیں،  صحت مندانہ سرگرمیوں کو فروغ دینا بھی وقت کا تقاضا ہے نشے کے خلاف علم جہاد بلند کرنے پر ہنگو یوتھ اسمبلی کی اکاوشوں کی ستائش کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر آصف شریف سینئر صحافیوں،  طارق محمود مغل، اسرار احمد ممتاز عاالم دین مفتی یونس قاسمی، مولانا عبدالجلیل اور ہنگو یوتھ اسمبلی کے چیئرمین سید عدنان اور سی ایم منظور خان نے یوتھ اسمبلی کے زیر اہتمام منشیات کے خلاف اگاہی واک سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مین چوک ہنگو سے نکالی جانے والی واک میں ڈی ایس پی آصف شریف، ایس ایچ او محمود عالم خٹک، ٹریفک انچارج نور محمد، ملک ساجد خان، سابقہ ممبر ضلع کونسل فرمان خان،ہنگو یوتھ اسمبلی کے ممبران اور سول سوسائٹی کے اہم اراکین شریک ہویے۔ ریلوے چوک پر ریلی سے ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر آصف شریف، مفتی یونس، مولانا عبدالجلیل، چیر مین یوتھ اسمبلی سید عدنان، سئینر صحافیوں طارق محمود مغل، اسرار آحمد اورکزئی اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ منشیات تمام سماجی اور اخلاقی برائیوں کا سب سے بڑا محرک ہیں جن کی روک تھام سیاسی قیادت، سول سوسائیٹی اور انتظامیہ کی مشرکہ ذمہ داری ہے انہوں نے کہا کہ صحت مندانہ سرگرمیوں کو فروغ دیکر ہم منشیات سے نئی نسل کو بچا سکتے ہیں۔مقررین نے کہا کہ ہنگو میں کھیلوں کے میدانوں کو آباد کر کے لائیبریاں بنا کر اور صحت مندانہ سرگرمیوں کو فروغ دیکر منشیات کا قلع قمع ممکن بنایا جا سکتا ہے۔مقررین نے ہنگو یوتھ اسمبلی نے سماجی برائیوں کے خلاف عوامی اگاہی کے لیے کوششیں لائق ستائش ہیں۔اس موقعہ پر انڈیا میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم  کی شان میں گستاخی پر مبنی کلمات کی پر زور مزمت کی گئی۔اور انڈیا کی مصنوعات کے بائیکاٹ سمیت دیگف ہندوستان کے خلاف اقدامات کرنے کی قرارداد منظور کی گئی

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں