0

کسی کوملاکنڈ ڈویژن میں آمن وآمان خراب کرنے کی اجازت نہیں دینگے،کمشنر شوکت یوسفزئی

چکدرہ (مانند نیوز)  کمشنر ملاکنڈ دویژن شوکت علی یوسفزئی نے کہا ہے کہ کسی کو ملاکنڈ ڈویژن کی آمن و آمان خراب کرنے کی اجازت نہیں دینگے، حکومتی عملداری چیلنج کرنے والوں کے ساتھ آہنی ہاتھوں نمٹا جائے گا، منشیات فروشوں کو ایم پی او کے تحت جیلوں میں بھیج رہے ہیں، تجاوزات کے خلاف اپریشن عوامی مفاد میں شروع کیا ہے جس کے دور رس نتائج بر آمد ہونگے ان خیالات کا اظہار انہوں نے عوامی مسائل کے فوری حل کیلئے چکدرہ میں کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر دپٹی کمشنر دیر پائین محمد زبیر خان نیازی، ڈی پی او اکرام اللہ خان، اسسٹنٹ کمشنر محمد داود سلیمی، ڈی ایس پی فاروق جان خان، ٹی ایم او طارق ایوب، ایم این اے سید محبوب شاہ، تحصیل چیئرمین فیروز شاہ سمیت سرکاری محکموں کے نمائندے موجود رہے، کھلی کچہری میں خورشید علی خان، سید سلطنت یار ایڈوکیٹ،حسین شاہ خان یوسفزئی، انجمن تاجران ادینزئی کے صدر خواجہ فیض الغفور، علی بادشاہ، سرتاج خان، ملک فخر الزمان، خان بابو خان، جاوید خیال، مراد الرحمان سمیت کئی دیگر نے عوامی مسائل کی نشاندہی کرتے ہوئے واضح کیا کہ ایک مرتبہ پھر علاقے میں بد آمنی کی باتیں ہو رہی ہے جس پر عوام کو شدید تشویش ہے لہٰذا آمن و آمان برقرار رکھنے والے ادارے اپنی ذمہ داریاں پوری کریں، تجاوزات کے خلاف اپریشن میں دکانداروں کے ہونے والے نقصانات کے ازالے اور بازار میں سٹریٹ لائٹس نصب کرنے،کسی بھی ترقیاتی منصوبے کیلئے زمین کی ضرورت کے وقت مالکان کو اعتماد میں لینے، ملاکنڈ یونیورسٹی کے برطرف ملازمین کی بحالی، منشیات کا قلع قمع کرنے، چکدرہ بائی پاس متاثرین کو معاوضے کی ادائیگی، شاہ عالم بابا سے راموڑہ روڈ میں رکاوٹ دور کرنے، بائی پاس کے شروع میں روڈ کو توسیع دینے سمیت کئی عوامی مسائل کے حل پر زرو دیا گیا، کھلی کچہری سے کمشنر ملاکنڈ دویژن شوکت علی یوسفزئی نے واضح کیا کہ اب کی بار علاقے میں آمان و آمان کا مسئلہ پیدا ہونے نہیں دینگے، ریاستی رٹ کو چیلنج کرنے والوں کو اب کی بار نہ ریاست برداشت کریگی اور نہ عوام ایسا ہونے دینگے، انہوں نے ڈپٹی کمشنر کو ہدایت کی کہ مقامی پولیس سے منشیات کے مکروہ کاروبار سے منسلک افراد کے نام لیکر انہیں ایم پی او کے تحت جیلوں بھیج دیں، کمشنر نے بائی پاس کے متاثرین کو جلد از جلد معاوضے کی ادائیگی سمیت بیشتر مسائل کے حل کیلئے متعلقہ اداروں کو ہدایات دی۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں