0

بدرمنیر مرحوم پشتو فلموں کے اولین ہیرو تھے،جمیل بابر

پشاور(مانند نیوز)پشتوسینما کے عظیم ہیرو بدرمنیر مرحوم کی پندرویں برسی کی شاندار تقریب آرکیالوجی ہال پشاور میں ثقافتی تنظیم آل افغان پختون فیڈریشن اور بدرمنیر ویلفیئر ارگنائزیشن کی جانب سے منعقد کی گئی15 برسی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان فلمز انڈسٹری کے سینئر ہیرو فلم سٹار امان، جمیل بابر، عشرت عباس،حضرت گل،جمعہ خان،بدرمنیر کے فرزند سید منیر،نعیم مخلص،محمد جاوید یوسفزئی اور دیگر مقررین نے پشتو فلموں کے عظیم ہیرو بدرمنیر مرحوم کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا مقررین نے کہا کہ بدرمنیر مرحوم پشتو فلموں کے پہلے اور اولین ہیرو تھے ان کی پہلی پشتو فلم یوسف خان شیر بانو تھی جو ایک لوک کہانی پر بنی تھی مرحوم نے پشتو فلم یوسف خان شیر بانو میں یوسف خان کا مرکزی کردار اس انداز سے ادا کیا جو ہمیشہ کیلئے امر ہوگیا بدرمنیر مرحوم ایک سیدھا سادھا اور ملنگ ٹایئف انسان تھے انھوں نے یوسف خان شیر بانو کے ذریعے پشتو فلم کی بنیاد رکھی ؎مقررین نے کہا کہ جب بدرمنیر زندہ تھے پشتو سنیما اورپشتو فلمی صنعت زندہ تھی لیکن ان کے انتقال سے بالخصوص پشتو سنیما کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا گزشتہ آٹھ اور نو سالوں میں پشاور، مردان نوشہرہ، منگورہ سوات،کوہاٹ اور دیگر شہروں میں پچاس سے زائد سنیما گھر مسمار کرکے ان کی جگہ شاپنگ سنٹر اور پلازے تعمیر کئے گئے بدرمنیر جب تک حیات تھے وہ پشتو فلمز اور پشتو سنیما کا سنہرا اور کامیاب دور تھا لیکن ان کے انتقال سے سنیما گھر بھی نہ رہے اور بزنس بھی ختم ہوگئی،انہوں نے کہا کہ بدر منیر مرحوم پیدائشی فنکار تھے ان جیسے فنکاروں کا خلا کبھی پر نہیں ہوگا، بدر منیر کوفلموں کی اکیڈمی کا درجہ حاصل تھا۔ بدر منیر مرحوم نے پشتو فلموں کے ذریعے معاشرے کی جو عکاسی کی ہے وہ آج کی پشتو فلموں میں نظر نہیں آرہی، بدر منیر کی ہر فلم میں ایک سبق اور مثبت پیغام ہوتا تھا، بدر منیر نے بڑی صاف ستھری فلموں میں کام کیا جو عریانی اور فحاشی سے پاک ہوتی تھی یہی وجہ ہے کہ لوگ اپنے باپ اور بھائیوں کے ساتھ یہ فلمیں دیکھتے تھے،بدرمنیر مرحوم کو منظوم خراج عقیدت پیش کیا۔

Share and Enjoy !

Shares

اپنا تبصرہ بھیجیں