پاراچنار،ایٹا ٹیسٹ پا س کرنے کے باوجود طلبا سکولوں اور کالجوں سے محروم

ہفتہ 11 Jul 2020


پاراچنار (مانند نیوز ڈیسک) ایٹا ٹیسٹ پا س کرنے کے باوجود قبائلی طلبا سکولوں اور کالجوں میں داخلے سے محروم ہیں جس سے طلبہ اور والدین میں بے چینی پیدا ہوگئی ہے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے طلبہ، والدین اور اساتذہ نے کہا کہ امسال 2020 میں قبائلی اضلاع سے تعلق رکھنے والے جماعت ششم اور ہفتم کے سٹوڈنٹس جو ایٹا ٹیسٹ  کے ذریعے ایف ایس سی تک مفت معیاری  تعلیم کیلئے شارٹ لسٹ ہو چکے ہیں اور ان کی ویریفیکشن پراسس بھی مکمل ہوچکا ہے فائنل سلیکشن اور ایڈمشن کیلئے سٹوڈنٹس اور والدین عرصہ دراز سے انتظار میں ہیں انہوں نے کہا کہ آج کل سارے آفسز میں سٹاف موجود ہوتا ہے اور کرونا کی وجہ سے بند سارے آفسز کھول دیے گئے ہیں لیکن افسوس کی بات ہے کہ ان آفسز میں کام نہیں ہو رہا اور سٹاف غفلت کی نیند سو رہی ہے جس کی وجہ سے بہت سے سٹوڈنٹس ذہنی تناؤ کا شکار ہو رہے ہیں حکام اعلی سے اپیل ہے کہ یہ مسئلہ جلد از جلد حل کرکے ہمارے مستقبل پر رحم فرمائیں آل کرم ٹیچرز یونین کے صدر زاہد حسین، جنرل سیکرٹری کرم ایجوکیشنل ٹرسٹ حضرت گل سعیداللہ صدر فاٹا سٹوڈنٹس فیڈریشن  اور دوسرے قبائلی مشران و نوجوانان نے حکومت سے سٹوڈنٹس کے ایڈمشن جلد از جلد یقینی بنانے پر زور دیا  واضح رہے کہ خیبر پختونخواہ کے پرانے اضلاع کے سٹوڈنٹس کیلئے ایڈمشن کا سارا پراسس  بروقت مکمل ہو چکا ہے اور وہ بھی قبائلی اضلاع کے سٹوڈنٹس کی طرح ویریفیکشن پراسس سے کلئیر ہوچکے تھے


کہانی کو شیئر کریں۔


آپ یہ بھی دیکھنا پسند کریں گے

اپنی رائے کا اظہا ر کریں۔



Total Comments (0)

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ مانندآئینہ محفوظ ہیں۔

بغیر اجازت کسی قسم کی اشاعت ممنوع ہے

Developed by : Murad Khan