0

صحت انصاف کارڈ میں لیور ٹرانس پلانٹ کو جلد سے جلد شامل کیا جائے،وزیراعلیٰ

پشاور (مانند نیوز ڈیسک) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود کی زیر صدارت میگا ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے اعلیٰ سطح اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس کے دوران صوبے میں میگا ترقیاتی منصوبوں پر اب تک کی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔اجلاس کو بریفنگ کے دوران کہا گیا کہ یکم فروری تک صوبے کی سو فیصد آبادی تک صحت انصاف کارڈز سکیم کی توسیع کا عمل مکمل کیا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ محمود خان نے ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ صحت انصاف کارڈ اسکیم میں لیور ٹرانس پلانٹ کو جلد سے جلد شامل کیا جائے۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ صوبے کے تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی میڈیسن کی دستیابی کو ہر لحاظ سے یقینی بنایا جائے۔سرکاری اسکولوں میں ڈبل شفٹ شروع کرنے کے لئے 117 سکولوں کی نشاندہی کی گئی ہے۔ سوات موٹروے فیز ٹو پر اگلے سال اگست میں عملی کام کا آغاز کیا جائے گا۔ پشاور ڈی آئی خان موٹروے منصوبے کے پی سی ون کی آج منظوری متوقع ہے۔ خیبر پاس اکنامک کوریڈور منصوبے کے لئے کنسلٹنٹ کی ہائرنگ پر کام جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ چشمہ رائٹ بینک لفٹ کینال منصوبے کی فیزیبلٹی کا پی سی ٹو منظور ہوگیا ہے۔ 300 میگاواٹ بالاکوٹ ہائیڈل پاور پراجیکٹ کا پی سی ون ایکنک سے منظور کر لیا گیا ہے۔وزیر اعلیٰ نے مزید کہا کہ رشکئی اکنامک زون کا منصوبہ افتتاح کے لئے تیار ہے۔ صوبے میں جاری میگا ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل میں تاخیر برداشت نہیں۔ تمام محکمے اپنے متعلقہ منصوبوں پر مقررہ ٹائم لائینز کے مطابق عملی پیشرفت کو یقینی بنائیں۔وزیراعلیٰ محمود خان نے کہا کہ عوامی فلاح و بہبود کے ان منصوبوں کے ثمرات بلا تاخیر عوام تک پہنچنے چاہئیں۔

خبر پر آپ کی رائے

اپنا تبصرہ بھیجیں